جنگ بندی ختم, امریکی طیاروں کی طالبان پر بمباری

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک )امریکا اور افغان طالبان کے درمیان امن معاہدہ ہونے کے چند روز بعد جنگ

بندی ٹوٹ گئی امریکی فورسز کی جانب سے طالبان پر پہلا فضائی حملہ کیا گیا ہے۔افغانستان میں

امریکی فوج کے ترجمان نے حملے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ امریکی فوج نے ہلمند صوبے

میں 4 مارچ کو طالبان جنگجوؤں پر فضائی حملہ کیا۔ترجمان نے مزید بتایا کہ طالبان افغان فورسز کی

چیک پوائنٹ کو نشانہ بنا رہے تھے، فضائی حملہ طالبان کے حملے کو روکنے کے لیے کیا گیا۔

امریکی فوج کے ترجمان نے بتایا کہ طالبان کے خلاف 11 دن میں یہ پہلا امریکی حملہ ہے، طالبان

نے عالمی برادری سے تشدد میں کمی، حملے نہ بڑھانے کا عہد کیا تھا، طالبان غیر ضروری حملے

روکیں اور وعدوں کی پاسداری کریں۔ترجمان امریکی فوج نے کہا کہ ہم امن کے لئے پرعزم ہیں لیکن

ضرورت پڑنے پر شراکت داروں کا دفاع کریں گے، ہم پر افغان فورسز کے دفاع کی ذمہ داری بھی

عائد ہوتی ہے۔امریکی فوج کے ترجمان نے کہا کہ طالبان عوام کی امن کی خواہش کو نظر انداز کر

رہے ہیں۔اس سے قبل طالبان کے افغان فوج پر حملے میں 16 فوجی اہلکار ہلاک ہوگئے۔افغان میڈیا

کے مطابق طالبان نے صوبہ قندوز کے ضلع امام صاحب میں فورسز پر حملہ کیا جس کے نتیجے میں

16 فوجی ہلاک ہوگئے۔افغان فورسز کی جانب سے بھی طالبان کے حملے میں فوجیوں کی ہلاکت کی

تصدیق کی گئی ہے۔افغان میڈیا کے مطابق طالبان نے حملے میں 10 فوجیوں کو بھی یرغمال بنالیا۔

افغان میڈیا کا کہنا ہے کہ طالبان کی جانب سے افغان حکومت پر حملوں کے دوبارہ آغاز کرنے کے

اعلان کے بعد سے ملک بھر میں حملوں میں اضافہ ہوا ۔واضح رہے کہ امریک اور افغان طالبان کے

درمیان امن معاہدہ 29 فروری کو دوحہ میں طے پایا جس کے تحت 5 ہزار طالبان قیدیوں کی رہائی

کے بدلے طالبان کو ایک ہزار قیدی رہا کرنے ہیں لیکن افغان صدر کی جانب سے 5 ہزار طالبان

قیدیوں کی رہائی سے انکار کے بعد طالبان نے انٹراافغان مذاکرات سے انکار کردیا ہے۔طالبان نے

کابل سے دوحہ بھیجے جانے والے 6 رکنی وفد سے ملاقات بھی نہیں کی اور کہا ملاقات صرف

قیدیوں کی رہائی سے متعلق بااختیار افراد سے ہی کی جائے گی۔معاہدے کے تحت افغانستان سے

امریکی اور نیٹو افواج کا انخلا آئندہ 14 ماہ کے دوران ہوگا جب کہ اس کے جواب میں طالبان کو

ضمانت دینی ہے کہ افغان سرزمین القاعدہ سمیت دہشت گرد تنظیموں کے زیر استعمال نہیں آنے دیں

گے۔معاہدے کا اطلاق فوری طور پر ہوگا، 14 ماہ میں تمام امریکی اور نیٹو افواج کا افغانستان سے

انخلا ہوگا، ابتدائی 135 روز میں امریکا افغانستان میں اپنے فوجیوں کی تعداد 8600 تک کم کرے گا ۔

وسری طرف افغانستان کے جنوبی صوبہ روزگان میں سکیورٹی فورسز کی چیک پوائنٹ پر طالبان

کے حملے کے بعد شدید لڑائی میں 6 پولیس اہلکار اور 8 حملہ آور ہلاک ہوگئے ہیں۔صوبائی پولیس

کے ترجمان زورگے ایبادی نے بدھ کے روز شِنہوا کو بتایا کہ واقعہ منگل کی رات کو پیش آیا جب

طالبان عسکریت پسندوں کے ایک گروپ نے صوبائی دارالحکومت ترین کوٹ کے علاقہ ناچین میں

سکیورٹی چیک پوائنٹ پر حملہ کر دیا۔واقعہ میں6پولیس اہلکار اور 8عسکریت پسند ہلاک

جبکہ7پولیس اہلکاروں سمیت11 زخمی ہوگئے۔ترجمان کے مطابق چیک پوائنٹ سکیورٹی فورسز

کے قبضہ میں ہے جبکہ عسکریت پسند اپنے ساتھی جنگجوئوں کی لاشیں موقع پر چھوڑ کر فرار

ہوگئے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply