جنسی ہراسانی الزامات:بالی ووڈ ہدایت کار راجکمارہیرانی گھر میں رہنے پر مجبور

Spread the love

نامور بالی ووڈ ہدایت کار راجکمار ہیرانی خود پر جنسی ہراسانی کے الزامات لگنے کے بعد گھر میں قید ہوکررہ گئے۔گزشتہ ماہ ایک خاتون اسسٹنٹ ڈائریکٹر نے بالی ووڈ کے معروف ہدایت کار راجکمار ہیرانی پر الزام لگاتے ہوئے کہا تھا کہ ہیرانی نے انہیں فلم سنجو کی شوٹنگ کے دوران 6 ماہ تک ایک سے زائد بار جنسی طور پر ہراساں کیا۔ توقع کے مطابق راجکمار ہیرانی نے بھی دیگر افراد کی طرح ان الزامات کی تردید کی تھی تاہم جنسی ہراسانی الزامات سامنے آنے کے بعد وہ گھر میں قید ہوکررہ گئے ہیں۔ میڈیا کے مطابق راجمکار ہیرانی کے پڑوسیوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب سے ہیرانی پر جنسی ہراسانی کے الزامات لگے ہیں انہوں نے گھر سے نکلنا ہی چھوڑدیاہے، وہ صبح کی چہل قدمی کے لیے بھی نہیں جاتے اور ان کا وزن بھی بے حد کم ہوگیا ہے کسی نے بھی انہیں نہیں دیکھا ایسا لگتا ہے جیسے وہ گھر میں نظر بند ہوکر رہ گئے ہیں۔واضح رہے کہ راجکمار ہیرانی کا شمار بالی ووڈ کے صف اول کے ہدایت کاروں میں ہوتا ہے انہوں نے کئی سپر ہٹ فلموں کی ہدایات دی ہیں جن میں پی کے، سنجو، تھری ایڈیٹس اورمنا بھائی ایم بی بی ایس شامل ہیں۔

Leave a Reply