jtn jaiza2

جموں ایئربیس پر حملہ بھارتی فالس فلیگ آپریشن کا نیا رُخ

Spread the love

سرینگر (جے ٹی این آن لائن جائزہ رپورٹ) جموں ایئربیس پر حملہ

جموں ایئر بیس پر نام نہاد حملہ پاکستان اورکشمیریوں کی جاری جدوجہد آزادی کو

بدنا م کرنے کیلئے بھارت کی طرف سے کئے جانے والے فالس فلیگ آپریشن

اورںیا جعلی حملوں کا ہی تسلسل ہے۔ کشمیرمیڈیا سروس کی طرف سے جاری کی

گئی ایک تجزیاتی رپورٹ میں کہا گیا ہے جس انداز سے جموں ایئربیس پر حملہ

کیا گیا اس سے واضح ہوتا ہے کہ یہ اندرونی عناصر کی ہی کارستانی ہے۔ رپورٹ

میں مزید کہا گیا ہے بھارت اس حملے کا الزام پاکستان پر عائد کر کے اسے فنانشل

ایکشن ٹاسک فورس کی بلیک لسٹ میں شامل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

=–= ایسی ہی مزید تجزیاتی رپورٹس، کالمز اور بلاگ ( =–= پڑھیں =–= )

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ آج سرینگر انٹرنیشنل ائیر پورٹ پر سینٹرل ریزرو

پولیس فورس کے اہلکار کے سامان سے Insas رائفل کی گولیوں کی برآمدگی سے

تصدیق ہوتی ہے کہ بھارتی قابض انتظامیہ پاکستان کو بدنام کرنے کیلئے ایک اور

ڈرامہ رچا سکتی ہے۔ اس سے قبل بھارتی حکومت کے حمایت یافتہ ہندو انتہا پسند

گروپ ممبئی حملوں، سانحہ سمجھوتہ ایکسپریس، مکہ مسجد اور مالیگاﺅں بم

دھماکوں میں ملوث رہے ہیں۔

=-،-= کشمیر کی خصوصی حیثیت کی بحالی زیر سماعت، مگر بات ہو سکتی ہے

نیشنل کانفرنس کے رہنما ریٹائرڈ جسٹس حسنین مسعودی نے ایک میڈیا انٹرویو میں

بی جے پی لیڈروں کے اس ڈھونگ پر کہ مقبوضہ جموں و کشمیر کی خصوصی

حیثیت کی منسوخی کا معاملہ عدالت میں زیر سماعت ہونے کی وجہ سے اس پر

بات نہیں کی جا سکتی پر انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ انہوں نے کہا بھارتی

سپریم کورٹ میں 5 اگست 2019ء کے فیصلوں کے خلاف زیر التوا عرضداشتیں

کشمیریوں کے ساتھ نا انصافی کے خاتمے اور غیر قانونی اقدامات کی منسوخی

کیلئے بھارتی حکومت کی راہ میں رکاوٹ نہیں۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار ان

میڈیا پورٹس پراپنے ردعمل میں کیا کہ جمعرات کو نئی دلی میں مقبوضہ جموں و

کشمیر کے سیاست دانوں کے ساتھ ملاقات میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے

دفعہ 370 اور 35A پر یہ کہتے ہوئے بات کرنے سے انکار کردیا تھا کہ یہ معاملہ

عدالت عظمی میں زیر سماعت ہے۔

=-،-= مسئلہ کشمیر کے حل میں تاخیر تباہی، کل جماعتی حریت کانفرنس

غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیرمیں کل جماعتی حریت

کانفرنس نے خبردارکیا ہے کہ تنازعہ کشمیر کے حل میں مزید تاخیر کے بڑے

پیمانے پر تباہ کن نتائج ہو سکتے ہیں۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق کل جماعتی

حریت کانفرنس کے جنرل سیکریٹری مولو ی بشیر احمد عرفانی نے سرینگر میں

جاری ایک بیان میں نریندر مودی کی فسطائی بھارتی حکومت کو باور کرایا ہے

کہ بڑی تعداد میں بھارتی فوجیوں کی موجودگی کے باوجود کشمیری نوجوان

بندوقوں کی گھن گرج میں سینہ تان کر کھڑے ہو جاتے ہیں اور بھارتی تسلط سے

آزادی کے نعرے بلند کرتے ہیں۔ انہوں نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے

مطالبہ کیا کہ وہ کشمیریوں کی نسل کشی روکنے کے لئے بھارت پر دباﺅ ڈالیں اور

دیرینہ تنازع کشمیر کے پرامن حل کے لئے اقدامات کریں۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

سید بشیراندرابی جموں و کشمیر ڈیموکریٹک فریڈم پارٹی اور اسلامی تنظیم آزادی

سمیت حریت رہنماؤں اور تنظیموں نے اپنے بیانات میں کشمیری عوام کو درپیش

مشکلات کو ختم کرنے کے لئے مذاکرات کے ذریعے تنازع کشمیر کے حل کی

ضرورت پر زور دیاہے۔ عبدالاحد پرہ نے حریت کارکن جاوید احمد نجار کی کالے

قانون پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت گرفتاری کی مذمت کی۔

=-،-= ریاستی دہشتگردی میں ایک اور کشمیری نوجوان شہید

بھارتی فوجیوں نے اپنی ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی میں پیر کو سری

نگر میں ایک اور کشمیری نوجوان کو شہید کردیا۔ فوجیوں نے نوجوان کو شہر

کے علاقے پارمپورہ میں محاصرے اورتلاشی کی ایک کارروائی کے دوران شہید

کیا۔ آخری اطلاعات تک علاقے میں فوجی آپریشن جاری تھا۔ ادھر نامعلوم مسلح

افراد نے ضلع پلوامہ کے علاقے ہاری پاری گام اونتی پورہ میں ایک سپیشل پولیس

افسر، اس کی بیوی اور بیٹی کو گولیاں مار کرقتل کر دیا۔ دریں اثناء بھارتی شہر

چندی گڑھ میں ایک کشمیری طالبعلم کے قتل پرسیکڑوں خواتین نے سوپور قصبے

میں بھارت کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا۔ خواتین سوپور کے علاقے

بمئی میں مقتول طالبعلم عامر حسین کی رہائشگاہ کے باہر جمع ہوئیں اور ” ہم

آزادی چاہتے ہیں اور آزادی ہمارا حق ہے“ جیسے نعرے بلند کئے۔

جموں ایئربیس پر حملہ

Leave a Reply