صفائی، ڈبلیو ایس ایس پی عملہ اور شہری، جتن کا آنکھوں دیکھا احوال

صفائی، ڈبلیو ایس ایس پی عملہ اور شہری، جتن کا آنکھوں دیکھا احوال

Spread the love

(پشاور:– بیورو چیف، عمران رشید خان) جتن آنکھوں دیکھا احوال

خیبرپختونخوا کے دارالحکومت پشاور شہر میں صفائی کی ناقص صورتحال پر

جرنل ٹیلی نیٹ ورک آن لائن (جتن ) کی جانب سے جاری سروے کے دوسرے

روز جب تحصیل گورگٹھری کے قریب کچرا اٹھانے میں مصروف ڈبلیو ایس ایس

پی کے اہلکار سے جتن کی ٹیم نے بات چیت کی تو اہلکار نے کہا کہ عملہ چھٹی

کے روز بھی اپنی ڈیوٹیاں سرانجام دے رہا ہے، لیکن شہریوں کی جانب سے اس

ضمن میں تعاون نہ ہونے کے برابر ہے-

=-،-= شہریوں کا تعاون نہ ہونے کے برابر، اہلکار ڈبلیو ایس ایس پی

صفائی، ڈبلیو ایس ایس پی عملہ اور شہری، جتن کا آنکھوں دیکھا احوال

ڈبلیو ایس ایس پی کے اہلکار کا مزید کہنا تھا کہ اگر شہری بروقت کچرا گھروں

سے باہر نکال کر ایک جگہ رکھ دیں تو گندگی پھیلنے میں کافی حد تک کمی

نمایاں ہوسکتی ہے، اکثر اوقات ایسا بھی ہوتا ہے کہ عملہ صفائی اپنا کام کر کے

چلا جاتا ہے، تاہم ایک یا دو گھنٹے بعد پھر اسی جگہ کچرا پھینک دیا جاتا ہے

ایسی صورتحال میں پھیلتی ہوئی گندگی پر قابو پانا کہیں زیادہ مشکل ہو جاتا ہے۔

=-،-= عملہ کئی کئی روز غائب رہتا ہے، صفائی کرتے شہری کا موقف

صفائی، ڈبلیو ایس ایس پی عملہ اور شہری، جتن کا آنکھوں دیکھا احوالصفائی، ڈبلیو ایس ایس پی عملہ اور شہری، جتن کا آنکھوں دیکھا احوال

اندرون شہر واقع اسی محلہ کے رہائشی سے ٹھیک اس وقت جتن کی ٹیم بات چیت

کی جس وقت وہ اپنے گھر کے باہر گلی کی صفائی میں مصروف تھا، انہوں نے

بتایا کہ ان کے محلے میں جگہ جگہ کچرے کے ڈھیر لگے رہتے ہیں، جبکہ عملہ

صفائی دو یا تین روز بعد ہی یہاں کا رخ کرتا ہے، اس لئے وہ بچوں کو ہمراہ لئے

اپنے گھر کے باہر پڑا کچرا اٹھا کر گلی کے نکر پر لگے گندگی کے ڈھیر پر

=،= پڑھیئے، حکمرانوں کی غفلت سے پھولوں کا شہر پشاور کوڑا دان میں تبدیل

پھینک کر آنے کے بعد خود ہی محلے کی صفائی کر لیتا ہے، جس میں بچے اس

کی مدد کرتے ہیں، اور یہ کام ہفتے میں دو دن ضرور کرنا پڑتا ہے، ورنہ گلی تو

ایک طرف اپنے گھر میں بھی تعفن و بدبو کے باعث سانس لینا دشوار ہو جاتا ہے

اور اوپر سے مچھر مکھیوں کی بہتات کا عذاب علیحدہ جھیلنا پڑتا ہے۔

=-،-= شہریوں کے غیر ذمہ دارانہ رویے کی ایک جھلک

صفائی، ڈبلیو ایس ایس پی عملہ اور شہری، جتن کا آنکھوں دیکھا احوالصفائی، ڈبلیو ایس ایس پی عملہ اور شہری، جتن کا آنکھوں دیکھا احوال

جتن کی جانب سے جاری سروے کے دوران اندرون شہر صفائی کی اصل

صورتحال کا جائزہ لینے کے دوران نشتر آباد میں گنجان آباد محلے کے عین اس

جگہ گندگی کے لگے ڈھیر پر شہری گند پھنکتے نظر آئے جہاں چار محلوں کا

ملاپ (چوک) اور شہریوں کے گزرنے کا راستہ تھا، اس وقت نہ تو وہ شہری گند

پھنکتے وقت جھجک محسوس کررہے تھے اور نہ ہی انہیں کوئی منع کرنے والا

دکھائی دیا، جو جتن کی جانب سے لی گئی تصویر میں واضح دیکھائی دے رہا

ہے-

=-،-= شہر کے گندگی میں آٹ جانے کی ایک بڑی وجہ -.-.-؟

صفائی، ڈبلیو ایس ایس پی عملہ اور شہری، جتن کا آنکھوں دیکھا احوال

پاکستان تحریک انصاف کی حکومت آتے ہی گزشتہ حکومتوں کی صفائی حوالے

سے موجود فارمولا کو یکسر تبدیل کرتے ہوئے ڈبلیو ایس ایس پی کو صفائی کی

بھاگ ڈور سونپ دی گئی، اس دوران تیزی سے آنیوالا تبدیلی کا طوفان گلی محلوں

میں رہے سہے ( ڈسٹ بین ) کوڑا دان بھی ساتھ اڑا کر لے گیا، بس کوڑا دان کا

خاتمہ ہونا تھا تو ساتھ میں ہی پورے شہر کوڑا دان بننا شروع ہو گیا اور تقریبا آٹھ

=،= ضرور پڑھیں، ڈبلیو ایس ایس پی نامنظور، پرانا نظام بحال کیا جائے

سال میں ذمہ داروں کے خیال میں اتنی سی بات جگہ نہ پا سکی کہ گلی کوچوں

میں پڑے یا نصب کوڑا دان کا نہ ہونا ہی گندگی پھیلنے کا سبب بنا ہوا ہے، لہذا

ضرورت اس امر کی ہے کہ سیاسی بغل بچہ ادارہ ڈبلیو ایس ایس پی اگر گلی

محلوں میں دوبارہ کوڑا دان نصب کر دے تو گندگی کی صورتحال میں خود بخود

کئی گنا کمی آنا شروع ہو جائے گی-

جتن آنکھوں دیکھا احوال ، جتن آنکھوں دیکھا احوال ، جتن آنکھوں دیکھا احوال

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply