جتنے مرضی ڈرامے کرلیں، احتسابی عمل نہیں رکے گا،وزیراعظم

Spread the love

میانوالی(نمائندہ خصوصی) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں

کرپشن ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے، جب تک چوروں کو نہیں پکڑا

جائے گا، ملک آگے نہیں بڑھے گا، جتنے مرضی ڈرامے کر لیں، احتسابی عمل

نہیں رکے گا، انسانیت کی بھلائی کے کام کرکے انسان کو روحانی خوشی محسوس

ہوتی ہے۔ امیر آدمی کو کبھی دنیا یاد نہیں کرتی، پروپیگنڈا کیا جا رہا ہے کہ ان

گرفتاریوں کا پاکستان کو کیا فائدہ ہوگا، ہمسایہ ملک نے اپنے 450 وزرا کو جیل

میں ڈالا اور وہاں سب سے زیادہ ترقی ہو رہی ہے، گزشتہ 10 سال میں ملک کا

قرضہ 6 ہزار سے 30 ہزار ارب ہو گیا ہے، مجھے دھمکیاں دی جا رہی ہیں کہ

اتنا کرو جتنا برداشت کر سکو، میں تو 22 سال سے اس انتظار میں تھا۔جمعہ کو

میانوالی نمل انسٹیٹیوٹ میں ہسپتال کے سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب

کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ روح خوش تب ہوتی ہے جب اللہ

تعالیٰ خوش ہوتا ہے، ایک انسان اپنی ذات کیلئے کام کرتا ہے جس سے روح خوش

نہیں ہوتی،ہسپتال میں جب لوگ آئیں گے اور دعائیں دیں گے تو آپ کو خوشی ملے

گی، جس سے سارے علاقے کے لوگ آپ کو دعائیں دیں گے، امیر آدمیوں کو

لوگ یاد نہیں کرتے، لوگ اس کو یاد رکھتے ہیں جس نے لوگوں کی خدمت کی ہو،

جیسے مادر ٹریسا اور گنگا رام ہیں، ہمارے صوفیا کرام کے مزاروں پر ہزاروں

یہ بھی پڑھیں:حکمران کی ہوس زر ملک و قوم کوتباہ و برباد کر دیتی ہے، وزیراعظم

لوگ آتے ہیں کیونکہ ان سے اللہ خوش ہے، انیل مسرت آپ کی اردو بلاول بھٹو

سے اچھی ہے، میانوالی میں میری خواہش تھی کہ ٹیکنیکل یونیورسٹی بنے،

کیونکہ نوجوان بے راہ روی کا شکار ہو گئے تھے،جو انسانوں کیلئے کچھ کر جاتا

ہے اس کو لوگ یاد رکھتے ہیں، انسانیت کی بھلائی سے انسانی روح کو خوشی

ہوتی ہے، پہلے نمل یونیورسٹی میں کوئی پی ایچ ڈی پروفیسر نہیں آتے تھے لیکن

آج یہاں22 پی ایچ ڈی پروفیسرز ہیں، جب شروع میں میانوالی میں یونیورسٹی کا

کہا گیا تو لوگوں نے کہا کہ یہ نہیں بن سکتی، پنجاب میں میانوالی، ڈی جی خان

پیچھے رہ گیا تھا اب حکومت کی کوشش ہے کہ ان علاقوں کو اوپر اٹھائیں،

میانوالی میں ماں بچے کا ہسپتال بنانے کا منصوبہ بھی تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ

جب کوئی ایک پکڑا جاتا ہے تو دوسرا گھبرا جاتا ہے، پروپیگنڈا کیا جاتا ہے کہ

احتساب سے عوام کو کیا فائدہ ہے، چین نے 450وزیروں کو جیل میں ڈالا ہے اور

مزید پڑھیں:وزیراعظم کا خرید وٍفروخت کیلئے شناختی کارڈ کی شرط ختم کرنے سے انکار
وہ سب سے زیادہ تیزی سے ترقی کر رہا ہے، کرپشن ترقی کی راہ میں سب سے

بڑی رکاوٹ ہے، کرپشن کی وجہ سے لوگ پاکستان میں سرمایہ کاری نہیں لاتے

ہیں، اوورسیز پاکستانی کو سب سے زیادہ درد ہے،اور جب ان سے پوچھا جائے کہ

پاکستان میں سرمایہ کاری کیوں نہیں کرتے تو کہتے ہیں کہ پاکستان میں کرپشن

بہت ہے، ملک میں 24ہزار ارب قرضہ چڑھا لیکن قوم کو یہ بتایا جائے کہ کیا

ترقی ہوئی، جب تک ملک میں احتساب نہیں ہو گا تب تک ملک ترقی نہیں کرے

گا، 22سال پہلے کہا تھا کہ اللہ تعالیٰ مجھے ایک موقع دے میں کرپشن کرنے

والوں کو نہیں چھوڑوں گا،جب تک چوری کرنے والے کا حتساب نہیں ہو گا

چوری نہیں رکے گی، احتساب وہ ہوتا ہے جیسے چین کے صدرشی جن پھنگ نے

وزیروں کو کرپشن میں پکڑ کر جیل میں ڈالا ہے، ہماری حکومت کسی کے اوپر

کیسز نہیں بناتی یہ سب پرانے ہیں ہم نے صرف اداروں کو آزاد کیا ہے، مجھے

باہر کے ممالک سے بھی سفارشیں بھجوائی گئی ہیں، بڑی قومیں تباہ ہوئیں جب

کمزور کیلئے ایک اور طاقتور کیلئے دوسرا قانون ہوتا تھا، یہ کہتے ہیں کہ انتقامی

کاروائی ہو رہی ہے، جب انہوں نے پانامہ کیس کے بعد مجھ پر انتقامی کاروائی

کی، مجھ پر 32کیسز بنائے لیکن میں باہر نہیں بھاگا اور نہ ہی میں نے ڈرامے

کئے، عدالت میں گیا اور 60دستاویزات جمع کرائیں اور عدالت نے مجھے صادق

اور امین کہا، ابھی تک انہوں نے ایک بھی مستند دستاویز جمع نہیں کرائی،جو

میرے ساتھ ہوا وہ جمہوریت کا عمل ہے اور وہ ان کے ساتھ بھی ہونا چاہیے اور

جواب دیں، جواب ہم لیں گے، قوم لے گی، جب بڑے پکڑے جائیں گے تو لوگوں

میں خوف آئے گا، آئین اور منی لانڈرنگ سے ڈرائیں گے، منی لانڈرنگ سے ڈالر

مہنگا ہوتا ہے، آج قوم سے کہتا ہوں کہ برا وقت ہے جو جلد ختم ہو جائے گا

اورانشاء اللہ اب یہ ملک تیزی سے اوپر جائے گا، ہیومن ریسورس ڈویلپمنٹ تعلیم

اور صحت کیلئے تیزی سے کام کریں گے، پاکستان کے بڑے سرمایہ کاروں کو

کہنا چاہوں گا کہ بڑے بڑے ہسپتالوں کو اپنے ذمہ لیں اور اپنا حصہ ڈال کراس کی

بہتری کیلئیکردار ادا کریں.

Leave a Reply