الیکٹرانک ووٹنگ مشین دھاندلی کا ماڈرن طریقہ، ثمر ہارون بلور

الیکٹرانک ووٹنگ مشین دھاندلی کا ماڈرن طریقہ، ثمر ہارون بلور

Spread the love

پشاور(جتن بیورو چیف، عمران رشید) ثمر ہارون بلور

عوامی نیشنل پارٹی نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے

کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین دھاندلی کا نیا اور ماڈرن طریقہ ہے، الیکشن کمیشن

نے بھی الیکٹرانک ووٹنگ مشین پر اعتراضات اٹھائے ہیں، الیکٹرانک ووٹنگ

مشین کو بنانے، سٹور کرنے اور فراہمی کیلئے 75 ارب روپے درکار ہیں۔ پشاور

پریس کلب میں انفارمیشن کمیٹی کے اراکین رحمت علی خان، تیمور باز خان اور

حامد طوفان کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے اے این پی خیبرپختونخوا کی

ترجمان ثمرہارون بلور نے مزید کہا 2023ء الیکشن کیلئے آج سے ہر روز 3000

مشینیں بنانی ہوں گی، آر ٹی ایس کا تجربہ پچھلے انتخابات میں ناکام ہوچکا ہے۔

=یہ بھی پڑھیں، ثمرہارون بلور اے این پی کے پی کے کی پارلیمانی سیکرٹری مقرر

ثمر ہارون بلور نے کہا وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی کے مطابق 45 سیکنڈز

میں پولنگ کے بعد نتائج دیے جائیں گے۔ جو ڈیٹا سٹور کیا جارہا ہے اس میں

شفافیت کی ضرورت ہے، ڈیٹا کو شناختی کارڈ کیساتھ جوڑا جائے تاکہ شفافیت

برقرار رہے۔ ثمرہارون بلور نے کہا اگر حکومت واقعی سنجیدہ ہے تو کنٹونمنٹ

انتخابات میں یہ تجربہ کروالے، اس سسٹم کو چلانے کیلئے تین سے پانچ لاکھ

لوگوں کو تربیت دینی ہو گی، ٹیکنیکل سٹاف اس سے الگ ہو گا، اگر مشین خراب

ہوجائے تو انکے لئے الگ لوگ چاہئیے ہوں گے، ثمر ہارون بلور کا مزید کہنا تھا

کہ دنیا کے 134 جمہوری ممالک ہیں، ان میں سے صرف 8 ممالک میں ای وی

ایم کے ذریعے انتخابات ہوتے ہیں۔ کیا ہم اتنے ایڈوانس ہو گئے، تمام مسائل ختم

ہو گئے کہ ہم ای وی ایم استعمال کرنے والا 9 واں ملک بن جائیں؟

=-،-= حکومت سنجیدہ ہے تو تمام سٹیک ہولڈرز سے بات کرے، ثمر ہارون

انہوں نے کہا اے این پی دھاندلی کے اس نئے نظام کو مسترد کرتی ہے اور ایوان

کے اندر اور باہر اس نظام کے خلاف ہر حد تک جائیں گے۔ اگر واقعی حکومت

سنجیدہ ہیں تو تمام سٹیک ہولڈرز سے بات چیت کی جائے۔ پارلیمنٹ کو نظرانداز

کر کے آرڈیننسز جاری کئے جارہے ہیں۔ کنٹونمنٹ بورڈ انتخابات کے بارے میں

ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کے اراکین نہ صرف ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی

کر رہے ہیں بلکہ مخالف امیدواروں کے کیمپس پر حملے بھی کئے جا رہے ہیں۔

پی ٹی آئی کے ایم پی ایز اور ایم این ایز ترقیاتی فنڈز کا بے دریغ استعمال کررہے

ہیں اور عوام کو لالچ دے کر انتخابی مہم چلارہے ہیں۔

=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

پی ٹی آئی کی تین سالہ کارکردگی کے بارے میں ثمر ہارون بلور کا کہنا تھا کہ

عوام کو ریلیف دینے کی بجائے بربادی کا سامنا کیا گیا، تین سالوں میں چینی کی

قیمتوں میں 23 فیصد، گندم کی قیمت میں 15 فیصد اضافہ ہوا، پٹرولیم مصنوعات

کی قیمتوں میں31 فیصد، بجلی کی قیمتوں میں 40 فیصد اضافہ ہوا، 2018ء میں

گردشی قرضہ 1148 ارب تھا جو اب 2.5 کھرب تک پہنچ چکا ہے، افراط زر کی

شرح 11 اعشاریہ 9 تک جا پہنچی ہے تو کھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں

11 اعشاریہ پانچ فیصد اضافہ ہو چکا ہے، جی ڈی پی کی شرح نمو 5 اعشاریہ 5

سے منفی صفر اعشاریہ چار تک پہنچا دی گئی ہے، تین سالہ کارکردگی دکھانے

کیلئے جو تصاویر لیں گئیں وہ بھی ایک بھارتی ویب سائٹ سے اٹھائی گئی ہیں-

ثمر ہارون بلور ، ثمر ہارون بلور ، ثمر ہارون بلور

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply