Hareem e Adab

تہذیبوں کی جاری جنگ میں ہمیں اپنی تہذیب کو جِلا بخشنے کیلئے فروغ دینا ہوگا

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لاہور (جے ٹی آین آن لائن خصوصی ادبی رپورٹ) تہذیبوں کی جاری جنگ

خواتین کی ادبی و اصلاحی انجمن ”حریم ادب ” کے تحت تربیتی ورکشاپ کا

انعقاد ہوا۔ سیکریٹری حریم ادب وسطی پنجاب عصمت اسامہ نے حریم ادب کے

مقاصد پہ روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ہمارا مقصد پاکیزہ اور مثبت ادب کا فروغ

اور نظریاتی قلم کار تیار کرنا ہے۔

=،= یہ بھی پڑھیں : اردو ادب میں ایک نئے دور کا آغاز
————————————————————————-

انھوں نے ملٹی میڈیا پریزینٹیشن بعنوان ” ادب بحیثیت محرکاتی قوت ” پیش کی،

جس میں عالمی ادب کے دنیا کے بدلنے میں کردار کو واضح کیا۔ محترمہ ربیعہ

طارق صدر وسطی پنجاب نے شہادت حق کے موضوع پر روشنی ڈالتے ہوئے

کہا کہ اس وقت تہذیبوں کی جنگ جاری ہے اور ہمیں اپنی تہذیب کو فروغ دینا

ہے- انھوں نے مقابلہ افسانہ نگاری اور شاعری بعنوان ” میں جس مکان میں

رہتا ہوں اس کو گھر کردے” میں انعام لینے والی خواتین کو انعام اور اسناد کا

بھی تحفہ دیا۔

” کہ فطرت خود بخود کرتی ہے لالے کی حنا بندی ” پر تربیتی نشست

مہمان خصوصی محترمہ فرزانہ چیمہ نے اختتامی کلمات میں کہا کہ لکھنے

سے پہلے قرآن کا مطالعہ ضرور کرلیں، آپا بنت الاسلام کا یہی طریقہ تھا اور

اپنی تحریر کی اساتذہ سے اصلاح کروایا کریں تاکہ اس میں نکھار پیدا ہو سکے۔

تربیتی نشست کے عنوان ” کہ فطرت خود بخود کرتی ہے لالے کی حنا بندی ”

پر روشنی ڈالتے ہوے عصمت اسامہ نے کہا کہ اقبال کے نزدیک ” لالہ”

دراصل بندہء مومن کا استعارہ ہے، وہ جب اللہ کی محبت میں خود کو خالص کر

لیتا ہے اور اپنے حب الہی کو خون جگر کی محنت میں ڈھال لیتا ہے تو اللہ کی

ذات اس کی پرورش کرتی ہے۔

=،= عالمی شہرت یافتہ ادیب عامر حسین کے اعزاز میں تقریب

تقریب میں کالم نگار راحیلہ چوہدری، ڈائجسٹ رائٹر حبیبہ عمیر، کہانی نویس

رخسانہ اقبال نے بھی شرکت کی، مرکزی شعبہ حریم ادب کے تحت مقابلہ

افسانہ نگاری اور شاعری میں پوزیشن ہولڈرزمیں انعامات تقسیم کیے گئے جن

میں اول انعام سعدیہ مغل، دوم انعام شاہدہ اقبال، سرٹیفیکیٹ براے حوصلہ افزائی

روبینہ اعجاز کو دیئے گئے-

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

تہذیبوں کی جاری جنگ

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply