کیویز دورہ منسوخی، توقیر ضیاء کا محتاط، خالد محمود کا شدید ردعمل

کیویز دورہ منسوخی، توقیر ضیاء کا محتاط، خالد محمود کا شدید ردعمل

Spread the love

اسلام آباد (جے ٹی این سپورٹس نیوز) توقیر ضیاء خالد محمود

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے ایک سابق چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل (ر)

توقیر ضیا نے نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ اور کھلاڑیوں کو ذمہ دار ٹھہرانے سے

انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ آگے ورلڈ کپ ہے سوچ سمجھ کر فیصلہ کرنا

چاہیے، جب کہ دوسرے سابق چیئرمین پی سی بی خالد محمود نے حکومت کو

تجویزدی ہے کہ آئی سی سی کا انتظار کرنے کے بجائے پاکستان خود کوئی قدم

اُٹھائے- آئی سی سی کو انڈین کرکٹ کونسل ہی سمجھیں، آئی سی سی کوئی

ایکشن نہیں لے گا-

=–= کھیل اور کھلاڑی سے متعلق مزید خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

ایک انٹرویو میں سابق چیئرمین پی سی بی توقیر ضیا نے کہا کہ پاکستان سے

سیریز منسوخ کرنے کے معاملے میں نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ اور پلیئرز کو میں

ذمےدار نہیں ٹھہراﺅں گا۔ آگے ورلڈ کپ ہے سوچ سمجھ کر فیصلہ کرنا چاہیے،

میرے خیال میں دہشت گردی ایک بہانہ ہے۔ پی سی بی کے سابق چیئرمین نے

کہا کہ دہشت گردی کا بہانہ بورڈ سے اوپر کا کام ہے، ہمیں وہ فیصلہ کرنا چاہے

جو قومی مفاد میں ہو۔ انہوں نے کہا کہ نیوزی لینڈ کا پاکستان کا دورہ چھوڑ کر

چلے جانے جیسا جو کچھ بھی ہوا ہے وہ حکومتی سطح پر ہوا ہے۔ توقیر ضیا

نے کہا کہ کیا آئی سی سی آپ کے نقصان کا ازالہ کرنے کو تیار ہے؟ حکومتی

سطح پر پاکستان کو چاہیے کہ احتجاج کرے۔ انہوں نے سوال کیا کہ اگر برطانیہ

نے نیوزی لینڈ کو منع کیا ہے تو وہ کیوں پاکستان آئیں گے؟

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

دوسری طرف ایک نجی ٹی وی چینل سے گفتگو میں سابق چیئرمین پی سی بی

خالد محمود نے حکومت کو تجویزدی ہے کہ آئی سی سی کا انتظار کرنے کے

بجائے پاکستان خود کوئی قدم اٹھائے۔ آئی سی سی کو ہی انڈین کرکٹ کونسل

سمجھیں، آئی سی سی کوئی ایکشن نہیں لے گا۔ سابق چیئرمین پی سی بی خالد

محمود نے کہا حکومت سفارتی ذرائع سے نیوزی لینڈ حکومت سے دورہ ملتوی

کرنے پر تفصیلات فوری مانگے، خالد محمود نے یہ بھی کہا کہ آئی سی سی کو

اس معاملے میں ایکشن لینا چاہیے، لیکن آئی سی سی بنیادی طور پر انڈین کرکٹ

کونسل ہے، آئی سی سی کا کوئی کردار نہیں، وہ کیا ایکشن لے گی۔

توقیر ضیاء خالد محمود ، توقیر ضیاء خالد محمود ، توقیر ضیاء خالد محمود

Leave a Reply