Rajab Tayyab Erdogan talking with media 128

القدس کا دفاع مسلمانوں کی اجتماعی ذمہ داری ہے، ترک صدر رجب طیب ایردوان

Spread the love

انقرہ، مقبوضہ بیت المقدس (جتن آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) ترک صدر ایردوان

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ القدس کا دفاع مسلمانوں کی اجتماعی ذمہ داری ہے، عالم اسلام اپنے بعض اندرونی

مسائل میں الجھا ہوا ہے- عالمی سطح پر کوئی فیصلہ نہیں کراسکے- بعض اوقات جب ہم فلسطینیوں اور القدس پر ظلم ہوتا دیکھتے ہیں

کہ ہم خود کو تنہا محسوس کرتے ہیں۔ مزید پڑھیں

عالم اسلام اندرونی مسائل میں الجھ گیا، عالمی استعمار اپنی پالیسیوں پر گامزن، ترک صدر

ترک نشریاتی ادارے کے مطابق اسلامی تعاون تنظیم کے سماجی امور سے متعلق وزارتی اجلاس سے خطاب میں صدر ایردوان نے

کہا کہ اس وقت عالم اسلام اپنے بعض اندرونی مسائل میں الجھا ہوا ہے، ہمارے وسائل اور توانائی ضائع ہو رہی ہے، ہم اپنے اپنے حجم

اور تعداد کے باوجود عالمی سطح پرکوئی موثر فیصلہ نہیں کرا سکے ہیں۔ ترک صدر نے کہا کہ بعض اوقات جب ہم فلسطینیوں اور

القدس پر ظلم ہوتا دیکھتے ہیں کہ ہم خود کو تنہا محسوس کرتے ہیں۔ عالمی استعمار اپنی پالیسیوں پر چل رہا ہے اور عالم اسلام اپنے

اندرونی خلفشار میں الجھا ہوا ہے۔ ہم مسلمانوں کو یہ بات نہیں بھولنی چاہیے کہ القدس کا دفاع ہماری اجتماعی ذمہ داری ہے۔

یہودیوں کی مذہبی رسومات کی ادائیگی میں مدد کیلئے تاریخی مسجد ابراہیمی کی ناکہ بندی

اسرائیلی فوج نے ایک بار پھر یہودی آباد کاروں کو مذہبی رسومات کی ادائیگی میں مدد فراہم کرنے کیلئے تاریخی مسجد ابراہیمی کی

ناک%8ک %D8د %F%DB1%AB%8%بر A78%D ں8%1%ػے ג D85%B8 %8%سد D87%A8%C%DB1ۊم ש %A8%1 ي%مӺ D87%B8%C%DB6ۉل %D ج9ک %D5ل %A%DA3تو ة بڑ %DA%8%د8 تعینات

ہے،قابض فوج کے دستے پیدل اور بکتر بند اور بلٹ پروف گاڑیوں پر مسجد سے ملحقہ سڑکوں پر گشت کررہے ہیں۔

مسجد کے اطراف میں صہیونی فورسز کے مسلح دستوں کی بڑی تعداد تعینات ،رپورٹ

رپورٹ کے مطابق اسرائیلی فوج کی طرف سے مسجد کی ناکہ بندی کے نتیجے میں فلسطینیوں کے لیے مسجد میں نماز کے لیے

پہنچنا مشکل ہوگیا ہے۔ مسجد ابراہیمی کے ڈائریکٹر ھفظی ابو اسنینہ نے میڈیا کو بتایاکہ مسجد کے اطراف میں متمرکز اسرائیلی فوج

نے فلسطینی نمازیوں کو مسجد تک پہنچنے سے روکنے کیلئے مختلف حربے استعمال کیے تاہم اس کے باوجود سینکڑوں فلسطینیوں نے

مسجد ابراہیمی میں نمازیں ادا کیں۔

ترک صدر ایردوان

Leave a Reply