تحریک لبیک سے معاہدہ آئین،قانون کے مطابق ہوا، علی محمدخان

Spread the love

تحریک لبیک سے معاہدہ

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) وزیر مملکت علی محمد خان نے کہا ہے کہ تحریک لبیک

پاکستان(ٹی ایل پی) سے جو بھی معاہدہ ہوا آئین اور قانون کے مطابق ہوا ہے۔میڈیا سے گفتگو میں علی

محمد خان کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ جب بھی بلائیگی میں پیش ہوں گا۔ٹی ایل پی کوپابند کیا ہے کہ

آئندہ جوبھی سرگرمی کرے آئین و قانون کے اندر کرے، وزیراعظم ٹی ایل پی سے معاہدے کے

پیچھے کھڑے رہے، آرمی چیف نے بھی اپنا کردار ادا کیا۔ان کا کہنا تھا کہ ٹی ایل پی سے معاہدے

میں علمائے کرام سمیت تمام دیگر سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے کردار ادا کیا۔دوسری جانب

سوشل میڈیا پر اپنے بیان میں پی پی سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے کالعدم تحریک طالبان پاکستان

(ٹی ٹی پی) سے مذاکرات پر عوامی ریفرنڈم کرانے کی تجویز دیدی۔سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے

کہا کہ آئین کے آرٹیکل 48 کے تحت ریفرنڈم پر غورکیا جاسکتا ہے، قوم کو ‘ہاں’ یا ‘ناں’ میں فیصلہ

کرنے دیا جائے۔مصطفیٰ نواز کھوکھرکا کہناہیکہ کالعدم تحریک طالبان سے مذاکرات عوامی اہمیت کا

معاملہ ہے، یہ فیصلہ کوئی بھی فرد یا حکومت یکطرفہ طور پر نہیں کرسکتی۔عوامی نیشنل پارٹی کے

رہنما زاہد خان کا کہنا ہیکہ حکومت کس طرح عام معافی کا اعلان کرسکتی ہے ، اے پی ایس کے

متاثرہ خاندانوں کوانصاف کب ملے گا؟۔

تحریک لبیک سے معاہدہ

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply