Beauty of Humanity

بیوٹی آف ہیومینٹی کا لاوارث بچوں کیلئے شیلڈ ہوم کے قیام کا اعلان

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لاہور(جتن آن لائن جنرل رپورٹر) بیوٹی آف ہیومینٹی

بیوٹی آف ہیومینٹی کے زیر اہتمام غریب اور مستحق افراد میں سردیوں کیلئے کمبل تقسیم کرنے کی سادہ مگر پُروقار تقریب ونڈالا روڈ شاہدرہ میں ہوئی- غریب و نادار شہریوں کو امدادی اشیاء دینے کی اس تقریب کے مہمان خصوصی بیوی آف ہیومینٹی کے جنرل سیکرٹری حامد مختار اور ناظم یونین کونسل رحمت کالونی آصف اقبال کھوکھر تھے- مزید پڑھیں

نادار و مستحق افراد میں کمبل تقسیم کرنے کی تقریب کا انعقاد

Beauty of Humanity
جنرل سیکرٹری بیوٹی آف ہیومینٹی حامد مختار اور ناظم یونین کونسل رحمت کالونی آصف اقبال کھوکھرمستحق خواتین اور مردوں میں کمبل تقسیم کررہے ہیں
———————————————————————————————————————-
حامد مختار اور آصف اقبال کھوکھر نے اس موقع پر سیکڑوں غریب و مستحق خواتین اور مردوں میں گرم کمبل تقسیم کئے- غریب اور مستحق افراد نے بیوٹی آف ہیومینٹی کے اس احسن اقدام اور سماجی و فلاحی تنظیم کے صدر شیخ اعجاز احمد کی غریب پروری کو بے حد سراہا۔ اور ڈھیروں دعاؤں سے نوازا-

موجودہ حالات میں سماجی تنظیموں کی ذمہ داری بڑھ چکی، حامد مختار

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بیوٹی آف ہیومینٹی کے جنرل سیکرٹری حامد مختار نے کہا موجودہ حالات میں سماجی تنظیموں کی ذمہ داری بڑھ گئی ہے کہ وہ غریب اور پسے ہوئے طبقات کو معاشرہ کا حصہ بنانے کیلئے ایسے اقدامات کریں۔ اس موقع پر انہوں نے تنظیم کی جانب سے جلد لاوارث بچوں کیلئے شیلڈ ہوم کا بھی جلد قیام عمل میں لانے کا اعلان کیا-

معاشرے کے پسے ہوئے طبقے کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنا اسلام کا درس اولین ہے، آصف اقبال کھوکھر

مہمان خصوصی ناظم یونین کونسل رحمت کالونی آصف اقبال کھوکھر کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا سماجی تنظیم کی فلاح انسانیت کیلئے کاوشیں باعث تقلید ہیں- مخیر حضرات اور صاحب ثروت شخصیات کو ایسی سماجی اور فلاحی تنظیموں کیساتھ دل کھول کر معاونت کرنا چاہیے تاکہ معاشرے میں پسے ہوئے طبقات کو خود کفیل بنانے کیلئے اقدامات اٹھائے جا سکیں- ان کا مزید کہنا تھا دین اسلام کا پہلا درس ہی غریب پروری ہے- ہمیں اپنے آس پاس موجود ایسے مستحق افراد اور خاندانوں کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کیلئے انفرادی اور اجتماعی کوششوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہیے-

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply