khabar i Hai jtnonline

بھارت، سعودی عرب میں والدین کی جہالت و غفلت سے دو بچیاں ابدی نیند سو گئیں

Spread the love

نئی دہلی، ریاض (جے ٹی این آن لائن خبر آئی ہے) بھارت سعودی عرب والدین

دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے دعویدار ملک بھارت میں جہالت اب بھی

رقصاں ہے، ریاست گجرات میں بیٹی کی پیدائش سے مغموم والدین نے ایک ماہ

کی بیٹی کو قتل کر دیا۔ جبکہ سعودی عرب میں والدین کی غفلت نے چار سالہ

کمسن بچی کو آوارہ کتوں نے بھنبھوڑ ڈالا، دلخراش واقعات پر دنوں علاقوں میں

افسردگی کا سماں، تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست گجرات میں پیش آنیوالے

اندوہناک واقعے نے انسانیت کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا، جہاں ضلع کیڈی کے

رہائشی والدین ایک بیٹی کی پیدائش کے بعد دوسری بیٹی کے ہونے پر نہایت

ناخوش اور مغموم تھے، ایک ماہ بعد والدین نے اپنی بیٹی کو قتل کردیا اور اسے

قدرتی موت کا رنگ دیا تاہم پوسٹمارٹم رپورٹ میں بھانڈا پھوٹ گیا، پولیس نے

والدین سمیت 4 افراد کو گرفتار کر لیا، مودی سرکار کا بیٹی پڑھا بیٹی بچا کا نعرہ

لاحاصل ہوتا دکھائی دے رہا ہے کیونکہ حکومت ایسے واقعات کی روک تھام میں

مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے۔

=–= آوارہ کتوں نے 4 سالہ بچی کو بھنبھوڑ ڈالا، گوشت ادھیڑ دیا

سعودی عرب میں آوارہ کتوں نے 4 سالہ معصوم بچی کو بھنبھوڑ ڈالا، دلخراش

واقعے نے پورے علاقے کو افسردہ کر دیا، بچی اکیلی باہر نکلی تو قریب موجود 5

آوارہ کتوں نے بچی پر حملہ کر دیا، بچی کی چیخ و پکار پر ماں باہر نکلی تو اپنے

جگر گوشے کو خونخوار کتوں کے جبڑوں میں پھنسے دیکھ کر اس نے بھی رونا

اور چیخنا چلانا شروع کر دیا، جس پر جمع ہوئے راہگیروں نے کتوں کو دور

بھگایا لیکن تب تک بہت دیر ہوچکی تھی۔ یہ افسوسناک واقعہ ریاض سے 25 کلو

میٹر دور وصحلہ کے علاقے میں پیش آیا، بچی کو فوری طور پر ہسپتال لے جایا

گیا لیکن وہ جانبر نہ ہو سکی- لواحقین کے مطابق کووڈ 19 کے حفاظتی اقدامات

کے تحت ہسپتال کے باہر انتظار بھی بچی کی موت کا سبب بنا- مذکورہ علاقے میں

آوارہ کتوں کی بہتات ہے جس سے وہاں کے افراد کی جانوں کو خطرہ ہے، یہاں

آنے والے افراد کیساتھ ننھے بچے بھی موجود ہوتے ہیں، مقامی حکام نے کئی

شکایات کے باوجود تاحال کوئی قدم نہ اٹھایا-

بھارت سعودی عرب والدین

=—–= قارئین =-: خبر اچھی لگے تو شیئر کریں، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
=—–=ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )

Leave a Reply