201

بھارت ،متنازعہ قانون کیخلاف مظاہروں میں شدت،درجنوں افراد گرفتار،پٹنا میں ٹرین سروس دہلی میں میٹرو بسیں معطل

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارت میں شہریت کے متنازعہ قانون کیخلاف دارالحکومت نئی دہلی اور

ممبئی سمیت کئی شہروں میں بڑے پیمانے پر احتجاجی مظاہروں میں شدت آگئی،اتر پردیش سمیت

مختلف شہروں میں مظاہروں میں شریک درجنوں افراد کو گرفتار کرلیاگیا ، ریاست بہار کے شہر پٹنا

میں آل انڈیا سٹوڈنٹس فیڈریشن کے ارکان نے ٹرینیں رکوا دیں جبکہ دارالحکومت نئی دہلی میں بھی

14 میٹرو سٹیشن بند کر دیئے گئے۔نئی دہلی کے علاقوں میں سرکاری احکامات پر موبائل فون اور

انٹرنیٹ سروس بھی معطل کر دی گئی ہے۔،اتر پردیش اور کرناٹکا میں بھی دفعہ 144 نافذ کر کے

پولیس کی بھاری نفری کو تعینات کر دیا گیا ۔تفصیلات کے مطابقبھارت میں شہریت ترمیمی قانون

(سی اے اے) کے نفاذ کے خلاف ملک بھر میں جاری احتجاج اور مظاہروں پر پابندی عائد کردی گئی

جس کے بعد پولیس نے مختلف شہروں سے 100 سے زائد مظاہرین کو گرفتار کرلیا۔غیر ملکی میڈیا

رپورٹ کے مطابق بھارت کے بانی موہن داس گاندھی (مہاتما گاندھی) کی سوانح حیات تحریر کرنے

والے تاریخ دان رام چندرا گوہا ان افراد میں شامل ہیں جنہیں ریاست کرناٹک کے دارالحکومت بنگلور

سے گرفتار کیا گیا۔گرفتاری کے بعد فون پر بات کرتے ہوئے رام چندرا گوہا نے بتایا کہ وہ ایک بس

میں سوار ہیں جس میں ان کے ساتھ گرفتار کیے جانے والے دیگر افراد کو پولیس کسی نامعلوم مقام پر

منتقل کررہی ہے۔نئی دہلی میں سواراج انڈیا پارٹی کے چیف یوگیندرا یادیو، ان افراد میں شامل ہیں

جنہیں گرفتار کیا گیا۔بھارتی ریاست راجستھان میں پولیس نے شہریت کے متنازعہ قانون پر سوشل

میڈیا پر پوسٹ جاری کرنے پر ایک کشمیری طالب علم کو تشدد کانشانہ بنانے کے بعد گرفتار کرلیا ۔

کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق ایس ایس کالج آف انجینئرنگ اودے پور میں بی ٹیک تھرڈ ائیر کے

کشمیری طالب علم مدثر لون نے منگل کو سوشل میڈیا کی سائیٹ انسٹاگرام پر اپنا اسٹیٹس اپ ڈیٹ

کیاتھا ۔ کشمیری طالب علم کے سینئر ساتھی عمران منظور نے میڈیا کو بتایا کہ بعض طلباء نے مدثر

کو اپنی پوسٹ ڈیلیٹ کرنے اور معافی مانگنے کا کہاتھا تاہم اس نے انکار کر دیا ۔ بدھ کی شام جب وہ

کالج سے باہر گیا تودیگر طلباء نے مدثر سے معافی مانگنے کا کہا اور انکار کرنے پر اسے تشدد کا

نشانہ بنایا ۔ بعدازاں مدثر کو کالج کے وارڈن نے طلب کرلیا ۔ بھارتی پولیس اور کالج کے ایم ڈی اسے

ایک کمرے میں لے گئے ۔ پولیس نے مدثر پر تشدد کیا اور گرفتار کرکے اپنے ساتھ لے گئے ۔دوسری

جانبلندن میں بھارتی ہائی کمیشن کے سامنے شہریت کے متنازع بل کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ہوا،

مظاہرین نے نریندر مودی اور امیت شاہ کے خلاف شدید نعرہ بازی کی۔مظاہرین نے ہندوتوا نظرئیے

کے خلاف پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر مسلمانوں کے خلاف متنازع بل واپس لینے کے حق میں

نعرے درج تھے۔شرکاء میں زیادہ تر بھارتی مسلمان شہری شامل تھے، اس دوران آر ایس ایس اور بی

جے پی سے آزادی کے نعرے بھی لگائے گئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں