بھارتی دہشتگردی میں شہید 11کشمیری سپرد خاک ، آج بادامی باغ چلو مارچ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں بھارتی فوج کے ہاتھوں شہید ہونے والے 11نوجوانوں کو ان کے آبائی علاقوں میں ہزاروں سوگواران کی موجودگی میں سپرد خاک کر دیا گیا جبکہ68زخمی زیر علاج ہیں جن میں سے 23کو بھارتی فوج نے براہ راست گولیوں کا نشانہ بنایا،،حریت کانفرنس نے آج’’ بادامی باغ چلو‘‘ کی کال دے دی، مختلف علاقوں میں پر تشدد مظاہرے، طلبہ پر لاٹھی چارج ، فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں متعدد افراد زخمی ہو گئے، کاروباری مراکز، بازار دکانیں بند،انٹر نیٹ ، موبائل اور ریل سروس معطل رہی ، پلوامہ میں غیر معینہ مدت کیلئے کرفیونافذ کر دی گیا ہے ۔ ۔شہداء کی شناخت عدنان احمد،عامر احمد پال،ظہور احمد،شاہد کھانڈے ،عابد حسین لون ،اشفاق احمد،شہباز علی،لیاقت علی ،سہیل احمد،مرتضیٰ اور توصیف احمد میر کے ناموں سے ہوئی تھی۔جو سرنو ،کریم آباد اور نواحی علاقوں کے رہائشی تھے ،۔شہداء کی نماز جنازہ میں قدغنوں کے باوجود ہزاروں افراد نے شرکت کی ۔شہدا کا آخری دیدار اور ایک جھلک دیکھنے کے لیے امڈ آئے۔سوگواروں میں خواتین اور بچے بھی شامل تھے ،جب 11 شہدا کے جنازے اٹھے تو رقت آمیز مناظر دیکھنے میں آئے،بعدازاں سبز ہلالی پرچموں میں لپٹے شہید نوجوانوں کو آہوں اور سسکیوں میں سپرد خاک کیا گیا، بھارتی ظلم و جارحیت کے خلاف سری نگر سمیت مختلف علاقوں میں احتجاجی مظاہرے ہوئے اور مشتعل نوجوانوں نے قابض فوج پر شدید پتھراؤ کیا۔ قابض فوج نے جواب میں نہتے نوجوانوں پر گولیاں چلائیں، پیلٹ گنز سے فائرنگ اور آنسو گیس کی شیلنگ کی۔ کٹھ پتلی انتظامیہ نے احتجاج اور مظاہرے روکنے کے لیے وادی میں ٹرین، انٹرنیٹ اور موبائل فون سروس بھی معطل کردی۔دوسری طرف کشمیری بہن بھائیوں سے اظہار یکجہتی اور بھارتی بربریت کیخلاف انڈونیشیا میں بھی مظاہرے کئے گئے اور عالمی برادری سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply