0

بھارتی حملے کا جواب،وزیراعظم نے فوج کو اختیار دیدیا

Spread the love

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے پاک فوج کو بھارت کی کسی مہم جوئی یا جارحیت کا فیصلہ کن جواب دینے کا اختیار دے دیا۔ گزشتہ روز وزیراعظم کی زیرصدارت پی ایم ہااؤس میں قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا جو 3 گھنٹے سے زائد جاری رہا،

اجلاس میں تینوں مسلح افواج،حساس اداروں کے سربراہان،سیکیورٹی حکام ،خزانہ، دفاع، خارجہ کے وفاقی وزرائ اور وزیر مملکت برائے داخلہ بھی شریک ہوئے۔

اجلاس میں ملک کی اندرونی و سرحدی سیکیورٹی کی صورتحال،افغان مصالحتی عمل میں پیش رفت اور پاکستان کو ششوں کا جائزہ لیا گیا۔ خارجہ حکام نے عالمی عدالت انصاف میں زیر سماعت بھارتی جاسوس کلبھوشن کیس پر بریفنگ دی ۔

قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق اجلاس میں اہم فیصلے کیے گئے۔ کمیٹی نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی مذمت،پلوامہ حملے میں پاکستان کے ملوث ہونے کے بھارتی الزامات کویکسر مستردکیا

پلوامہ حملہ بھارت کے اندر مقامی سطح پر پلان ہوا اور کرایا گیا۔ پاکستان نے مخلصانہ طور پر بھارت کو واقعے کی تحقیقات میں مدد جبکہ دہشت گردی سمیت دیگر متنازعہ امور پر مذاکرات کی بھی پیش کش کی

امیدہے بھارت پاکستان کی تحقیقات کے حوالے سے پیش کش کا مثبت جواب دے گا۔ کمیٹی کا کہنا تھا بھارت کو سوچنا چاہیے مقبوضہ کشمیر میں تشدد کی کارروائیوں سے یہ ردعمل آرہا ہے۔

اعلامیے کے مطابق قومی سلامتی کمیٹی نے عزم کیا پاکستان کی سرزمین استعمال کرنے میں کوئی ملوث پایا گیا تو سخت ترین ایکشن لیں گے۔ پاک فوج کو بھارت کی کسی مہم جوئی یا جارحیت کا فیصلہ کن جواب دینے کا اختیار دیا گیا.

وزیراعظم نے کہا یہ نیا پاکستان ہے، ہم پرْ عزم ہیں، ریاست عوام کے تحفظ کی پوری صلاحیت رکھتی ہے، کسی بھی قسم کی طاقت کا استعمال صرف ریاست کا استحقاق ہے۔

اجلاس سے قبل وزیر اعظم عمران خان سے آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے ملاقات کی جس میں پلوامہ حملہ کے بعد پاک بھارت کشیدگی سمیت ملکی سلامتی اور خطے کی مجموعی سکیورٹی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ وزیر اعظم ہائوس میں ملاقات کی جو 30 منٹ تک جاری رہی.

Leave a Reply