دنیا کی آبادی کے پانچویں حصے کو کرونا وائرس کا شدید خطرہ لاحق ہے، عالمی ماہرین

بنگلہ دیش بھی بھارت کی روش پر، ذات برادری کی آڑ میں تذلیل انسانیت

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

ڈھاکہ(جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) بنگلہ دیش بھارت روش

بنگلہ دیشن کے دارالحکومت ڈھاکہ میں انسانی حقوق کے وکیل نے کہا ہے کہ بنگلہ دیش میں کرونا وائرس کے لیے مختص 2 ہسپتالوں نے ملک کی بدترین کچی آبادی سے تعلق رکھنے والے مریضوں کے علاج سے انکار کر دیا ہے۔

——————————————————————————
یہ بھی پڑھیں : مرغا، سُوری لکھوانے کے بعد اب اتاری جانے لگی ” آرتی”
——————————————————————————

تفصیلات کے مطابق بہاری کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شکایت کی ہے کہ عالمی کرونا وائرس وباء نے اس تفریق کو اجاگر کردیا ہے، جو وہ دہائیوں سے برداشت کررہے ہیں۔ انسانی حقوق کے وکیل خالد حسین اورپولیس کا کہنا ہے کہ جینیوا کیمپ میں رہائشی 2 افراد میں کرونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔

قارئین : خبر اچھی لگے تو شیئر ضرور کریں

خالد حسین نے کہا کہ کووڈ-19 کے مریضوں کے علاج کرنے والے سرکاری ہسپتال نے دونوں افراد کو ہسپتال میں یہ کہہ کر داخل کرنے سے انکار کردیا کہ ان کی حالت تشویشناک نہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب ایک اور مقامی ہسپتال نے جینیوا کیمپ کے رہائشیوں کو ان کی صحت کے مسئلے کے باوجود علاج سے انکار کردیا کیونکہ عملے کو خوف ہے کہ وہ وائرس کا شکار ہوسکتے ہیں۔

پالتو جانوروں میں وائرس کی منتقلی کا پہلا واقعہ

ادھر امریکہ میں دو بلیوں میں نئے کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے۔ پالتو جانوروں میں وائرس کی منتقلی کا امریکہ میں یہ پہلا کیس ہے۔ متاثرہ بلیاں نیو یارک شہر کے دو مختلف حصوں سے ہیں۔ توقع ہے کہ دونوں مکمل طور پر صحتیاب ہو جائیں گی۔

اپ ڈیٹ رہیں : جے ٹی این آن لائن کو سوشل میڈیا پر فولو کرکے

طبی ماہرین کے مطابق فی الحال ایسے کوئی شواہد نہیں کہ پالتو جانور انسانوں میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کا سبب بن سکتے ہیں۔ انسانوں سے جانوروں میں نئے کرونا وائرس کی منتقلی کے کیس اس سے پہلے بھی سامنے آ چکے ہیں۔

بنگلہ دیش بھارت روش

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply