بلوچستان،پنجاب اورسندھ میں طوفانی بارشوں سے تباہی،21 افراد جاں بحق، درجنوں زخمی

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

کوئٹہ،لاہور،کراچی(جے ٹی این آن لائن)وطن عزیز کے تین صوبوں بلوچستان،

پنجاب اورسندھ میں تیزآندھی کے ساتھ طوفانی بارشوں کے باعث مختلف حادثات

میں بچوں اورخواتین سمیت 21 افراد جاں بحق ،درجنوں زخمی ہو گئے. بلوچستان

میں دریائے ناڑی، دریائے بولان اوردریائے لہڑی میں نچلے درجے کے سیلابی

ریلے گزر رہے ہیں ۔ محکمہ موسمیات کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران

جیوانی میں 90، تربت 39، گوادر 32، پسنی 19، بارکھان اور کوئٹہ 17 جبکہ

سبی میں 9 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی جا چکی ہے۔ بارشوں کے باعث اندرون

بلوچستان ندی نالوں میں طغیانی آگئی، حکومت نے بلوچستان بھر میں الرٹ جاری

کردیا۔ وزیراعلیٰ ہاؤس میں کنٹرول روم قائم کر دیا گیا ہے، گوادر میں بارشوں

کے بعد آکڑہ اور بیلار ڈیم بھرگئے ہیں، سیلاب کے باعث ہرنائی کا ملک بھر سے

زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔ کراچی سمیت اندورن سندھ میں میں تیزگرد آلود ہوائوں

کے باعث حد نگاہ کم ہوگئی، کئی علاقوں میں بجلی کی تاریں ٹوٹنے سے بجلی

کی فراہمی متاثر ہو گئی۔ سمندر میں چلنے والی طوفانی ہوائوں کی وجہ سے 2

کشتیاں ڈوب گئیں،3ماہی گیروں کو بچا لیا گیا جبکہ 12ماہی گیر تاحال لا پتہ ہیں

جن کی تلاش کا کام جاری ہے۔ مغربی ہوائوں کا سسٹم آج منگل تک موجود رہے

گا۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران گرج چمک کے ساتھ

ہلکی بارش کا امکان ہے، مغربی ہواں سے بننے والے نظام کے باعث گزشتہ کئی

روزسے بلوچستان میں بارشیں برسا رہا ہے جواب پنجاب میں داخل ہو چکا ہے۔

اس نظام کے باعث پنجاب کے جنوبی اضلاع بہاولپور، ملتان، لودھراں، رحیم

یارخان، ڈیرہ غازی خان، فیصل آباد اوردیگرعلاقوں میں بارشیں برس رہی ہیں۔

گزشتہ روز شام کے وقت اچانک تیز آندھی شروع ہو گئی جس سے نظام زندگی

معطل ہو گیا۔ تیز ہوائوں کی وجہ سے کئی مقامات پر تشہیری بورڈ گر گئے بجلی

کا ترسیلی نظام متاثر ہوا جس سے کئی علاقوں میں بجلی بند ہو گئی۔ تیز آندھی

اور بارش کی وجہ سے لیسکو ریجن کے 150 سے زائد فیڈرز ٹرپ کر گئے

جس کی وجہ سے کئی علاقے تاریکی میں ڈوب گئے. محکمہ موسمیات کے

مطابق لاہور میں وقفے وقفے سے بارش کا سلسلہ آئندہ 24 سے 36 گھنٹوں تک

جاری رہے گا، تیز ہوائیں بھی چلتی رہیں گی۔ صورتحال کے پیش نظر متعلقہ

اداروں کی طرف سے سفر کرنے والوں کو بہت محتاط رہنے کی ہدایات جاری

کر دی گئی ہیں۔ دوسری طرف شدید بارشوں کے باعث آم کے باغات اور گندم کی

فصل بھی شدید متاثر ہوئی ہے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply