Lodon, Prince-Charles Shaking Hands to their Followers 93

برطانوی شاہی خاندان مشکل میں، شہزادہ چارلس کرونا کا شکار

Spread the love

لندن(جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) برطانوی شہزادہ چارلس کرونا

کرونا وائرس کے تیزی سے پھیلاﺅ سے برطانوی شاہی خاندان بھی مسائل سے دوچار ہوگیا، ستر سالہ شہزادہ چارلس بھی وائرس سے متاثر، معمولی علامات ظاہر ہو گئیں،البتہ صحت مند ہیں اور انکا علاج معالجہ شروع کر دیا گیا ہے-

مزید پڑھیں : کرونا میں کون مبتلا، قرنطینہ منتقل، ٹیسٹ کلئیر قرار؟

ملکہ برطانیہ الزبتھ اور ان کے بیٹے شہزادہ چارلس کی جانب سے کرونا سے بچنے کے لیے شاہی محل چھوڑ کر دوسری جگہ منتقل ہونے کے بعد اس بات کے قوی امکانات پیدا ہوگئے ہیں کہ شہزادہ ولیم عارضی طور پر بادشاہت کے فرائض سر انجام دیں گے۔ عالمی وباء کی وجہ سے ملکہ برطانیہ اور ان کے جانشنین بیٹے شہزادہ چارلس کی جانب سے خود کو انتظامی سرگرمیوں سے محدود کیے جانے کے بعد یہ امکانات پیدا ہوگئے ہیں کہ شہزادہ ولیم عارضی طور پر بادشاہ بنیں گے۔ شاہی تجزیہ کاروں کا کہنا تھا کہ اگرچہ تاحال ملکہ برطانیہ اور ان کے بیٹے خود کو قرنطینہ میں بند کرنے کا اعلان نہیں کیا، تاہم اگر دونوں ایسا اعلان کرتے ہیں تو پھر شہزادہ ولیم بادشاہت سنبھال لیں گے۔

ملکہ برطانیہ بیٹے شہزادہ چارلس سمیت شاہی محل چھوڑ کرقرنطینہ منتقل

اسی حوالے سے برطانوی اخبار ڈیلی میل نے بھی شاہی محل کے معاملات کو دیکھنے والے تجزیہ نگاروں کے حوالے سے بتایا کہ چوں کہ برطانوی وزارت صحت نے پہلے سے ہی اعلان کر رکھا ہے کہ جن افراد کی عمر 70 سال سے زائد ہے وہ کرونا وائرس کا شکار نہ ہونے کے باوجود خود کو قرنطینہ کردیں۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ چونکہ ملکہ برطانیہ کی عمر 93 برس جبکہ ان کے بیٹے شہزادہ چارلس کی عمر 71 برس ہے تو دونوں کو احتیاطی تدابیر کے پیش نظر قرنطینہ جانا پڑے گا، جس کے بعد جسمانی طور پر بادشاہت کے فرائض سرانجام دینے کے لیے شہزادہ ولیم ہی دستیاب ہوں گے۔

شہزادہ ولیم عارضی طور پر بادشاہت کے فرائض انجام دینے کیلئے تیار

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ شہزادہ ولیم بادشاہت کے نمبر کے حوالے سے تیسرے نمبر پر ہیں اور چوںکہ دوسرے نمبر پر ان کے 71 سالہ والد ہیں اور اگر وہ بھی زائد العمری کی وجہ سے قرنطینہ ہوگئے تو شہزادہ ولیم ہی آخری امید ہوں گے اور انہیں عارضی طور بادشاہ کی ذمہ داریاں نبھانا پڑیں گی۔

برطانوی شہزادہ چارلس کرونا

اپنا تبصرہ بھیجیں