امریکی تاریخ کا بدترین بحران، 2کروڑ 20لاکھ سے زائد افراد بیروزگار

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

واشنگٹن(جے ٹی این آن لائن نیوز) ( بدترین بحران)ملک گیر ایمرجنسی کے نفاذ کے اعلان کے بعد سے اب تک امریکا بھر میں 2 کروڑ 20 لاکھ سے زائد افراد بیروزگاری کا شکار ہو کر حکومتی مدد کے لیے درخواست دے چکے ہیں، دوران روزگار کے سلسلے میں حاصل ہونے والے فوائد، نقصان میں تبدیل ہوچکے ہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے چار ہفتے قبل ملک گیر ایمرجنسی کے نفاذ کے اعلان کے بعد سے اب تک امریکا بھر میں 2 کروڑ 20 لاکھ سے زائد افراد بیروزگاری کا شکار ہو کر حکومتی مدد کے لیے درخواست دے چکے ہیں۔

واشنگٹن پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق بڑھتی ہوئی بیروزگاری کے باعث امریکا کو ایک دہائی کے دوران روزگار کے سلسلے میں حاصل ہونے والے فوائد، نقصان میں تبدیل ہوچکے ہیں اور لوگ حکومت کی مدد کے لیے فوڈ بینکوں کے باہر قطار در قطار کھڑے نظر آ رہے ہیں۔لیبر ڈپارٹمنٹ نے جمعرات کو بتایا کہ گزشتہ ہفتے 52 لاکھ افراد نے بیروزگاری کے باعث انشورنس کلیم فائل کیے تھے جو حالیہ دنوں میں ایک بڑا اضافہ ہے

جہاں گزشتہ دو ہفتوں بھی بالترتیب 66 لاکھ اور 69 لاکھ افراد نے انشورنس کمپنیوں سے رابطہ کیا تھا۔گریٹ ڈپریشن کے بعد سے امریکا میں اس حد تک بیروزگاری نہیں بڑھی اور کورونا وائرس کے باعث بڑھتی ہوئی اموات اور معاشی بحران کے باعث بند ہوتے ہوئے کاروباری حالات میں حکومت تیزی سے اقدامات اٹھانے میں ناکام نظر آ رہی ہے۔

ایک اندازے کے مطابق امریکا میں 2010 سے فروری 2020 تک تقریبا 2 کروڑ 20 لوگوں کو نوکریاں ملی تھیں لیکن اس وبا کے دوران محض چند ہفتوں میں اتنے ہی افراد نوکریاں گنوا چکے ہیں اور امریکی شہری ایک دہائی میں حاصل کی گئیں نوکریاں گنوا بیٹھے ہیں

گریٹر اسرائیل، صہیونی سیاسی آپریٹر کی امریکی اشرفیہ کو سزاء بدترین بحران، بدترین بحران

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply