بجٹ22-2021 حجم میں 1200 ارب اضافے کا فیصلہ، تنخواہیں 15 فیصد بڑھانے کی تجویز

بجٹ22-2021 حجم میں 1200 ارب اضافے کا فیصلہ، تنخواہیں 15 فیصد بڑھانے کی تجویز

Spread the love

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن بزنس نیوز) بجٹ22-2021 حجم

وفاقی حکومت نے نئے مالی سال کے بجٹ حجم میں 1200 ارب روپے اضافے کا

فیصلہ کرلیا ہے، بجٹ دستاویز کے مطابق سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 10

سے 15 فیصد اضافے اور تنخواہ دارطبقے پر کوئی نیا ٹیکس نہ لگانےکی تجاویز

دی گئی ہیں، جبکہ تنخواہوں میں اضافے کے لیے47 ارب اضافی رکھے جانے کا

امکان ہے۔ تنخواہوں اور پینشن کے لیے 95 ارب روپے اضافی مختص کرنے پر

بھی غور کیا جارہا ہے اور پینشن میں اضافے کے لیے 47.7 ارب مختص کیے

جانے کا امکان ہے جبکہ پینشن کے لیے بجٹ 527 ارب روپے سے زائد ہونے کا

امکان ہے-

=–= معیشت و کاروبار سے متعلق مزید خبریں (=–= پڑھیں =–=)

تفصیلات کے مطابق حکومت نے رواں مالی سال کل بجٹ حجم 8400 ارب روپے

رکھنے کی تجویز کرلی ہے۔ رواں مالی سال کل وفاقی بجٹ کا حجم 7295 ارب

روپے رکھا گیا تھا۔ بجٹ حجم میں اضافہ کے باوجود بجٹ خسارہ 2915 ارب

روپے ہونے کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق آئندہ بجٹ میں 3060 ارب

روپے قرضوں اور شرح سود کی ادائیگی کیلئے مختص کیے جانے کا امکان ہے

اور بجٹ 2021-22 میں بھی صوبوں کیلئے ترقیاتی بجٹ کی مد میں 1000 ارب

روپے مختص کیے جانے کا امکان ہے۔ ٹیکس آمدن 5829 ارب اور نان ٹیکس

آمدن کا ہدف 1420 ارب روپے رکھا جائے گا۔ آئندہ مالی سال معاشی ترقی کا ہدف

4.8 فیصد رکھنے کا ہدف ہوگا۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

دستاویز کے مطابق اگلے سال قرضو ں پر سود کی مد میں 3105 ارب خرچ ہوں

گے اور سبسڈیز پر 501 ارب، گرانٹس پر 994 ارب خرچ ہوں گے۔ دوسری جانب

ڈیفنس سروسز کے لیے 1330 ارب رکھنے کی تجویز ہے۔ آئندہ مالی سال 22-

2021ء کے بجٹ کے خدو خال سامنے آ گئے ہیں جس میں عوام پر مزید ٹیکس کا

بوجھ ڈالنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ وفاقی بجٹ میں 24 فیصد گروتھ کیساتھ خالص

ٹیکس وصولیوں کا ہدف 5 ہزار 829 ارب مقرر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ذرائع

کے مطابق براہ راست ٹیکس انکم ٹیکس وصولیوں کا ہدف 2 ہزار 182 ارب مقرر

کرنے کا فیصلہ کیا گیا، اس کے علاوہ وفاقی حکومت نے آئندہ بجٹ میں متعدد

شعبوں کیلئے ٹیکس چھوٹ ختم کرنے کی تجویز بھی دی ہے، ٹیکس چھوٹ ختم

کرنے سے20 ارب روپے سے زائد کی بچت ہو گی، تنخواہ دارطبقے کے میڈیکل

الاؤنس، کارپوریٹ ایگری کلچرل کے منافع، سوشل سکیورٹی اداروں کیلئے انکم

ٹیکس چھوٹ ختم کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ واضح رہے کہ وفاقی بجٹ 11

جون کو پیش کیا جائے اور بجٹ کا کل حجم تقریباً 8400 ارب روپے ہو گا۔

بجٹ22-2021 حجم

Leave a Reply