بجٹ منظورکرانیوالا عوام کا مجرم ہوگا ،مریم نواز

Spread the love

لاہور (جنرل رپورٹر) پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز شر یف نے

کہا ہے حکومت ہر محاذ پر ناکام ہو چکی ،گرفتاریاں دیکھ لیں ، ڈرنے کی کوئی

وجہ نہیں ،جلسے و جلوسوں کا شیڈول تیار ہے،نواز شریف کو دل کا عارضہ ہے

اور ان کی طبیعت بہتر نہیں ۔ میرے پاس ڈرنے کیلئے کچھ نہیں ہے، ہم نے جب

سے سیاست شروع کی تب سے سزائیں کاٹ رہے ہیں۔ نواز شریف نے مجھے کہا

میرے لئے بات نہ اٹھائیں، عوام مشکلات میں ہیں ان کیلئے باہر نکلو،عمران خان

کو حکومت ٹرے میں رکھ کر دی گئی، حکومت نے اسمبلی کو بھی کنٹینرز بنا دیا

ہے،عوا م حقیقی نمائندو ں کی جانب دیکھ رہے ہیں، اگر اپوزیشن جماعتیں عوام

کیساتھ نہ کھڑی ہوئیں تو ان کے غیض و غضب کا نشانہ بنیں گی ۔ حکو مت

اپوزیشن کے کتنے بھی لوگوں کو جیل میں ڈال دیے، پھر بھی ان نالائقوں سے

حکومت نہیں چلے گی ،قومی ترقیا تی کونسل کی تشکیل کا فیصلہ سمجھ سے

بالاتر ہے، پارلیمنٹ اور دیگر منتخب ادارے موجود ہیں تو پھر اس کی کیا

ضرورت تھی، میں اس معا ملے پر بس یہی کہوں گی نوکری کی تے نخرہ کی۔

لاہور میں ن لیگی رہنماؤں خواجہ سعد رفیق اور خو ا جہ سلمان رفیق کے گھر آمد

کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز کا کہنا تھا قانون اندھا ہوتا ہے

مگر نیب کے قا نون کی بہت بڑی آنکھیں بھی ہیں، علیمہ خان جرمانہ دے کر

اعتراف جرم کر چکی ہیں۔ نئی نسل کی نمائندہ ہونے کے ناتے ہمیں لوگوں کے

مسا ئل حل کرنے ہیں، حق کی بات کرنیوالے کو مقدمات، جیل، سیاسی انتقام اور

جلا وطنی سے ڈرایا جاتا ہے لیکن مجھے کسی چیز سے نہیں ڈرایا جا سکتا۔

وزیراعظم کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوںنے کہا سازشی کو سازشی کہنے سے

کوئی نہیں روک سکتا، یہ نالائقوں کی حکومت ہے۔ حکو مت کو اقتدار پلیٹ میں

رکھ کر دیا گیا، حکومت کتنے بھی لوگوں کو جیل میں ڈال دیں، پھر بھی ان

نالائقوں سے حکومت نہیں چلے گی۔ اس حکو مت کی پرورش ہی کنٹینر پر ہوئی

ہے، عوام اپوزیشن جماعتوں کی طرف دیکھ رہے ہیں، جو بجٹ کے حق میں ووٹ

دے گا عوام کی عدالت میں مجرم ٹھہرے گا۔ جعلی حکومت کو بجٹ پاس کرانا

آسان نہیں ہو گا، اپوزیشن کے لوگوں کو چن چن کر گرفتار کیا جا رہا ہے،

اپوزیشن کو چاہیے حکومت کو ٹف ٹائم دے اور حکمرانوں کو عوام کے سامنے

بے نقاب کرے۔ اپوزیشن جماعتوں کو مل کر عوام کی آواز بننا چاہیے، نواز شریف

نے اپنا معاملہ اللہ کے سپرد کر دیا ہے۔وینا ملک سے متعلق سوال پر مریم نواز نے

کہا اس کا جواب دینا وقت ضائع کرنیوالی بات ہے۔ مجھے قید کی صعوبتوں سے

نہیں ڈرایا جاسکتا۔ (ن) لیگی رہنماؤں کو انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے، ہمیں سعد

رفیق اور سلمان رفیق کی ضمانت کی بہت امید تھی، سعد رفیق کی غلطی یہ ہے کہ

انہوں نے نالائق اعظم کے مقابلے میں الیکشن لڑنے کی جسارت کی اور دونوں بار

جیت بھی گئے۔ بلاول بھٹو زرداری کیساتھ ملاقات میں سینیٹ چیئرمین کو ہٹانے

اور احتجاج کے حوالے سے بات چیت کی گئی، شہباز شریف کی بھی اپوزیشن

جماعتوں سے ملاقاتیں ہوئی ہیں، احتجاج اور دیگر امور کے حوالے سے سیاسی

جماعتوں سے بات چیت جاری ہے۔ سنتے آئے ہیں قانون اندھا ہوتا ہے لیکن نیب

کے قانون کی بڑی بڑی آنکھیں ہیں، نیب اپوزیشن کو نشانہ بنارہا ہے جبکہ نالائق

اعظم کی بہن علیمہ خان پر نیب کی نظر نہیں پڑتی۔ اگر سازشی حکومت آئی ہے

تو اس کو سازشی حکومت ہی کہنا چاہیے۔ میرا تو جلسوں اور ورکرز کنونشن کا

شیڈول تیار ہے، میں تو جلسے کروں گی، مجھے کسی چیز سے ڈرایا نہیں

جاسکتا، مجھے مشکلات میں گھرے عوام کیساتھ کھڑے ہونے اور حکومت کو

ووٹ چور اور سازشی کہنے سے کوئی نہیں روک سکتا۔اپوزیشن رہنما کا کہنا تھا

پہلی حکومت دیکھی ہے جو اپوزیشن کیخلاف احتجاج کررہی ہے،مریم نواز نے

کہا اے پی سی بہت جلد ہوگی، شہباز شریف کی اپوزیشن رہنماؤں سے بات چیت

جاری ہے۔ احتجاج کی شکل کیا ہوگی؟ اس کا فیصلہ آل پارٹیز کانفرنس (اے پی

سی) میں ہوگا۔

Leave a Reply