0

بارشوں ،برفباری سے سرد ی بڑھ گئی ،کئی علاقوں کا زمینی رابطہ منقطع،خوراک کی قلت 2افراد جاں بحق

Spread the love

ملک بھر میں بارشوں اور برفباری سے سرد ی کی شدت میں اضافہ ہوگیا،کئی علاقوں میں درجہ حرارت نقطہ انجماد سے گرگیا،برف باری سے بعض علاقوں کا زمینی رابطہ بھی منقطع گیا جس سے اشیائے خوردونوش کی قلت ہوگئی ،بارش کے بوعث کرنٹ لگنے سے 2افراد جاں بحق بھی ہوگئے ۔تفصیلا ت کے مطابق کراچی میں گرج چمک کے ساتھ ہونیوالی بارش سے جل تھل ایک ہوگیا، لیاقت آباد میں سڑک بیٹھ گئی، ٹریفک کی روانی متاثر ، بلدیہ کا عملہ سڑکوں پر جمع پانی نکالنے نہ پہنچ سکا،بلوچستان کے بالائی پہاڑی اور میدانی علاقے برفیلی ہوا ئو ں کی لپیٹ میں آگئے، وادی زیارت، کان مہترزئی اور توبہ اچکزئی میں درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے گرگیا، شدید ترین برفباری سے کالام اتروڑ روڈ ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا، بالائی علاقوں کے زمینی رابطے بھی بدستور بند ہیں،کئی دیہات میں خوراک، ادویات اور اشیائے خرد و نوش کی قلت پیدا ہوگئی، اسلام آباد ، راولپنڈی ، لاہور، گوجرانوالہ، سرگودھا، وہاڑی، بورے والا، میلسی اور گرد و نواح میں وقفے وقفے سے بارش جاری، وزیربلدیات سندھ سعیدغنی نے متعلقہ اداروں کو 2گھنٹے میں سڑکوں اورگلیوں سے نکاسی آب کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کوتاہی پرافسران وملازمین کو شوکاز نوٹس جاری کیے جائیں گے۔ کراچی میں وقفے وقفے سے ہونیوالی بارش نے شہر کی سڑکوں کو پانی میں ڈبو دیا۔ زیادہ بارش لانڈھی میں 31 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی۔گلستان جوہر میں 29، نارتھ کراچی میں 6 ، ناظم آباد میں 10، پی ایف بیس، فیصل اور مسرور بیس کے گرد و نواح میں 12 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔غریب آباد، ناظم آباد، گلستان جوہر، ڈرگ روڈ، ملیر کالا بورڈ، شاہراہ فیصل اور کارساز میں سڑکوں پر پانی جمع ہے۔ کراچی بلدیہ کا عملہ سڑکوں پرجمع پانی نکالنے کیلئے نہ پہنچ سکا، ہر طرف جل تھل ایک ہے جس سے ٹریفک کی روانی متا ثر ہے۔ تیز بارش کے باعث لیاقت آباد میں سڑک بیٹھ گئی جس نے انتظامیہ کی ناقص کارکردگی کا پول کھول دیا۔بارش کی بوندیں برستے ہی کے الیکٹر ک کا سسٹم بھی بیٹھ گیا جس سے کئی علاقے بجلی سے محروم ہیں۔ ترجمان کے الیکٹرک کا کہنا ہے کہ کچھ علاقوں میں بجلی بحال کر دی گئی جبکہ دیگر علاقوں میں بحالی کا کام جاری ہے، بارش کے باعث جوبلی میں افسوسناک واقعہ پیش آیا جہاں کرنٹ لگنے سے ایک شخص زندگی ہار گیا جس کی شناخت ریحان شاہ کے نام سے ہوئی، بارش کے باعث موٹر سائیکل پھسلنے سے متعدد افراد زخمی بھی ہوئے۔دوسری طرف سندھ کے مختلف شہروں حیدر آباد، شہید بینظیر آباد، جیکب آباد، سانگھڑ، سکھر اور لاڑکانہ میں تیز بارش ہوئی جس سے نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہوگیا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی، سکھر، لاڑکانہ ڈویژن میرپور خاض اور ٹھٹہ ڈویژن میں بادل مزید برسیں گے۔پنجاب کے شہر لاہور، گوجرانوالہ، سرگودھا، وہاڑی، بورے والا، میلسی اور گرد و نواح میں گزشتہ رات سے بارش کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے۔بلوچستان کے بالائی پہاڑی اور میدانی علاقے برفیلی ہوا ئو ں کی لپیٹ میں آگئے، وادی زیارت، کان مہترزئی اور توبہ اچکزئی میں درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے گرگیا۔محکمہ موسمیات کے مطابق زیارت میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 11 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جب کہ وادی کوئٹہ میں درجہ حرارت منفی 2 اعشاریہ 5، قلات میں منفی 3، دالبندین میں منفی ایک، ژوب میں 2، پنجگور 3، سبی 4، اور گوادر میں 13 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ملکی بالائی علاقوں میں برفباری کا سلسلہ جاری ہے، کالام اور مالم جبہ میں وقفے وقفے سے برفباری جاری ہے، میاندم اور مرغزار کے پہاڑوں پر بھی برفباری ہورہی ہے، شدید ترین برفباری سے کالام اتروڑ روڈ ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا۔ضلع غذر میں تین روز سے برفباری ہورہی ہے جس کے بعد باعث بالائی علاقوں کے زمینی رابطے بھی بدستور بند ہیں اور کئی دیہات میں خوراک، ادویات اور اشیائے خرد و نوش کی قلت پیدا ہوگئی۔جنوبی وزیرستان کے بالائی علاقوں میں بھی برف باری کا سلسلہ جاری ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق پیر سے بدھ تک مالاکنڈ، ہزارہ ڈویژن میں درمیانی سے شدید بارش کا امکان ہے اور آج پشاور، مردان، راولپنڈی، گوجرانولہ، لاہور ڈویژن، سرگودھا، فیصل آباد، بہاولپور، ملتان، ساہیوال، میرپور خاص اور ٹھٹہ ڈویژن میں چند مقامات پر بارش کا امکان ہے۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ مری، گلیات، گلگت بلتستان اور کشمیر میں درمیانی سے شدید برفباری کا امکان ہے اور برفباری سے برفانی تودے گرنے کا خدشہ ہے۔

Leave a Reply