0

ایرون فنچ اورعثمان خواجہ نے پاکستان جاکر کھیلنے کا معاملہ کرکٹ آسٹریلیا پرچھوڑ دیا

Spread the love

آسٹریلوی کرکٹر ایرون فنچ اور پاکستانی نژاد عثمان خواجہ نے پاکستان میں سیریز کھیلنے سے متعلق فیصلے کا اختیار آسٹریلوی کرکٹ بورڈ کے اوپر چھوڑ دیا۔

عثمان خواجہ کا کہنا ہے کہ پاکستان میں پیدا ہوا، مجھے وہاں جانے سے کوئی فرق نہیں پڑتا، حتمی فیصلہ کرکٹ آسٹریلیا نے کرنا ہے۔ اوپنر ایرون فنچ کا کہنا ہے کہ یواے ای کے سٹیڈیمز تماشائیوں سے خالی ہوتے ہیں، پاکستان میں میچز ہوں گے تو یقینی طور پر سٹیڈیمز میں ایک سیٹ بھی خالی نہیں ملے گی۔

آسٹریلوی میڈیا کے مطابق کینگروز کے پاکستان میں جاکر کھیلنے کے امکانات ہر گزرتے دن کیساتھ کم ہوتے جارہے ہیں پاکستان کرکٹ بورڈ نے پانچ میں سے دو میچز لاہور یا کراچی میں کھیلنے کی خواہش ظاہر کررکھی ہے۔کرکٹ آسٹریلیا نے مثبت اشارے ضرور دیے ہیں لیکن ابھی تک شیڈول کو حتمی شکل دینے سے گریزاں ہے، اوپنر ایرون فنچ اور عثمان خواجہ نے پاکستان جاکر کھیلنے کا معاملہ کرکٹ آسٹریلیا پر چھوڑ رکھاہے-

ایرون فنچ کا کہنا ہے کہ یواے ای کے اسٹیڈیمز تماشائیوں سے خالی ہوتے ہیں جب کہ پاکستانی فینز اپنی سرزمین پر کرکٹ میچز دیکھنے کے لیے بہت پرجوش دکھائی دیتے ہیں، اگر پاکستان میں میچز ہوں تو یہ ان سب کے لیے اس سے بڑی بات اور کیا ہوسکتی ہے، جب بھی وہاں پر میچز ہوں گے تو یقینی طور پر اسٹیڈیمز میں ایک سیٹ بھی خالی نہیں ملے گی۔عثمان خواجہ کا کہنا ہے کہ میں پاکستان میں پیدا ہوا، مجھے وہاں جانے سے کوئی فرق نہیں پڑتا لیکن حتمی فیصلہ کرکٹ آسٹریلیا نے کرنا ہے اور جیسا وہ کہیں گے-

اس کے مطابق ہی ہم نے میچز کھیلنا ہیں، وہ ہم سے بہتر جانتے ہیں کہ اس بارے میں کیا بہتر فیصلہ ہوگا۔آسٹریلوی میڈیا کے مطابق کرکٹ آسٹریلیا کے چیف ایگزیکٹو کیوین روبرٹس نے چند دن پہلے یہ واضح کیاتھا کہ ہم کھلاڑیوں کی حفاظت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے اور ماہرین کی مشاورت سے ہی معاملات کو فائنل کریں گے۔

Leave a Reply