corona-virus 73

کرونا وائرس، ایران میں 9 ہلاکتیں، پاکستان نے سرحد بند کردی

Spread the love

تہران، کوئٹہ، اسلام آباد، بیجنگ (جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک، سٹاف رپورٹر) ایران کرونا وائرس

ایران میں کرونا وائرس سے ہلاک ہونیوالے افراد کی تعداد 9 ہوگئی۔ ایرانی میڈیا کے مطابق محکمہ صحت ایران نے بتایا کہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 15 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے 3 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔ وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ افراد ایران کے مذہبی اہمیت کے حامل مرکزی شہر قم میں سامنے آئے ہیں۔ وائرس کے مزید پھیلنے کے خدشات کے پیش نظر قم سمیت ایران کے 14 صوبوں میں تعلیمی اور ثقافتی مراکز کو ایک ہفتے کیلئے بند کرنے کے احکامات جاری کیے گئے ہیں۔ متاثرہ علاقوں کے سکول، دفاتر اور دیگر عوامی مقامات کو عارضی طور پر بند کر دیا گیا ہے-

مزید پڑھیں: حکومت چین میں موجود بچوں کے والدین کو مطمئن کرئے، ہائیکورٹ

لبنان اور اسرائیل میں بھی کرونا وائرس کے کیسز کی تصدیق ہو گئی ہے۔ ایرانی وزیر صحت کے مطابق ایران میں کرونا وائرس چین کے ذریعے پہنچا ہے اور ہلاک ہونیوالوں میں سے ایک تاجر نے گذشتہ دنوں چین کے کئی دورے کیے تھے جس کے بعد چین کیلئے براہ راست پروازیں روک دی گئی ہیں۔ بگڑتی صورتِحال کے باعث قم میڈیکل اینڈ سائنس یونیورسٹی کے سربراہ نے قم کی مدد کرونا کے عنوان سے ایک پیغام میں کہا ہے کہ ہم فرنٹ لائن پر ہیں ہمیں مدد کی ضرورت ہے۔ عالمی ادارہ صحت نے بھی ایران کی صورتِحال کو انتہائی تشویش ناک قرار دیا ہے۔ کویت نے ایران میں کرونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد ایران کیلئے فلائٹ آپریشن بند کردیا۔

کویت کی ایران کیلئے اپنی تمام پروازیں معطل

کویت کی قومی فضائی کمپنی نے اعلان کیا ہے کہ وہ ایران کیلئے اپنی تمام پروازیں معطل کر رہی ہے۔ ٹویٹر پر جاری بیان میں بتایا گیا ہےیہ اقدام کرونا وائرس کے پھیلا کے اندیشوں کے بیچ کویت کی وزارت صحت اور شہری ہوا بازی کی جنرل اتھارٹی کی ہدایات کی بنیاد پر کیا گیا ہے۔ کویت کی بندرگاہوں نے کرونا وائرس کے سبب ایران کیلئے سمندری آمد ورفت کا سلسلہ بھی روک دیا ہے۔ اس سے قبل جمعرات کے روز عراقی فضائی کمپنی نے ایران کیلئے اپنی پروازیں معطل کر دینے کا اعلان کیا تھا۔ ایران میں کرونا وائرس سے ہلاکتوں کے باعث پاکستان نے ایران کیساتھ سرحد بند کردپا- پاکستان سے ایران جانیوالے مسافروں کو تفتان سرحد پر روک دیا گیا جبکہ ایران میں موجود پاکستانی زائرین کو فی الحال وہیں ٹھہرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

بلوچستان سے منسلک ایران سرحد پر ایمرجنسی نافذ

ایران میں مہلک کرونا وائرس سے 8 افراد کی ہلاکت کے بعد بلوچستان حکومت نے ایران سے منسلک سرحدی اضلاع میں ایمرجنسی نافذ کر دی ہے۔ ترجمان بلوچستان حکومت لیاقت شاہوانی کا کہنا ہے کرونا وائرس کے حوالے سے حکومت پوری طرح الرٹ ہے اور فیصلہ کیا ہے کہ بلوچستان سے ملحقہ سرحدی علاقوں سےکوئی بھی ایران میں داخل نہیں ہوگا۔ ایران میں موجود پاکستانی زائرین کو فی الحال ایران میں ہی ٹھرانےکا فیصلہ ہوا ہے۔ ایران میں موجود زائرین کے حوالے سے ایرانی حکام سے بات چیت کی جارہی ہے۔ ایران سے آنیوالے زائرین کی مکمل سکریننگ کرکے پاکستان آنے دیاجائیگا، جبکہ تفتان کے پاکستان ہاؤس میں موجود 89 زائرین کو واپس کوئٹہ بلایاجارہا ہے۔ دوسری جانب وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال صوبے میں کرونا وائرس سے بچاؤ کے اقدامات کی خود نگرانی کر رہے ہیں-

100 بستروں پر مشتمل موبائل ہیلتھ یونٹ تفتان پہنچا دیا گیا

ڈائریکٹر جنرل پی ڈی ایم اے عمران زرقون کا کہنا ہے 100 بستروں پر مشتمل موبائل ہیلتھ یونٹ تفتان پہنچا دیا گیا جہاں ایران سے پاکستان آنیوالے افراد کی سکریننگ کا عمل بھی شروع کر دیا گیا ہے۔ موبائل ہیلتھ یونٹ محکمہ صحت کے حوالے کیا جائے گا اور ایران سے آنیوالوں کو ہیلتھ یونٹ میں آبزرویشن میں رکھا جائے گا۔ جنریٹرز، واٹر سپلائی سسٹم اور 10 ہزار کرونا وائرس ماسک آج تفتان پہنچ جائیں گے۔ وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے ذرائع کے مطابق ایران سے بھی کسی مسافر کو پاکستان میں داخل نہیں ہونے دیا جا رہا- ذرائع کا بتانا ہے کہ کئی ایرانی ٹرانسپورٹ ڈرائیورز تفتان سرحد پر پھنس گئے ہیں جنہیں سکریننگ کے بعد روانہ کیا جائے گا۔ چھپ کر جانیوالے زائرین کو روکنے کیلئے خصوصی چیک پوسٹیں قائم کرنے کی ہدایات بھی جاری کر دی گئی ہیں۔

پاک ایران سرحد کیساتھ ملحقہ امیگریشن گیٹ بند

پاک ایران سرحد کیساتھ ملحقہ امیگریشن گیٹ بند،دو طرفہ آمدورفت اور ٹرانزٹ گاڑیوں کا داخلہ نہ ہوسکا۔ چیف سیکرٹری بلوچستان کے دفتر سے جاری ایک سرکلر میں تمام متعلقہ محکموں کو مستعد رہنے اور وائرس کی پاکستان منتقلی روکنے کیلئے ہنگامی اقدامات کرنیکی ہدایات جاری کی گئی ہیں- سرکلر کے مطابق محکمہ داخلہ و قبائلی امور بلوچستان کو زائرین کو ایران جانے سے روکنے کو یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔ اس سلسلے میں باقی صوبوں کی انتظامیہ سے بھی رابطہ کرنے کا کہا گیا ہے کہ تاکہ زائرین کی بلوچستان آمد کو روکا جا سکے- سرکلر میں محکمہ صحت کو ہدایت کی گئی ہے کہ ایران سے آنے والے افراد کو سکریننگ کے بغیر ملک میں داخل نہ ہونے دیا جائے۔

زائرین کو کرونا وائرس سے محفوظ رکھنے کیلئے مشترکہ ٹیمیں تشکیل

وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری نے کہا ہے کہ تفتان کے راستے آنے والے زائرین کو کرونا وائرس سے محفوظ رکھنے کیلئے مشترکہ ٹیمیں تشکیل دیدی گئی ہیں، کرونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے چینی حکام کیساتھ کھڑے ہیں، مشکل کی اس گھڑی میں چینی بھائیوں کیساتھ ہیں۔ پاکستانی زائرین کو کرونا وائرس سے محفوظ رکھنے کیلئے وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری نے زیارات کے ذمہ دار ایرانی حکام سے بات کی چیت کرتے ہوئے کہا زائرین کی صحت کے حوالے سے پالیسی بنائی جارہی ہے۔ تفتان کے راستے آنیوالے زائرین کو کرونا وائرس سے محفوظ رکھنے کیلئے مشترکہ ٹیمیں تشکیل دیدی گئی ہیں- کرونا وائرس کے پھیلا کو روکنے کیلئے چینی حکام کیساتھ کھڑے ہیں اور مشکل کی اس گھڑی میں چینی بھائیوں کیساتھ ہیں۔

چمن تفتان طورخم پر تربیت یافتہ عملے نے سکیننگ شروع کر دی

زائرین کی صحت کے حوالے سے وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر سے بھی رابطہ کیا اور اس حوالے سے بات چیت کی۔ چمن تفتان طورخم پر تربیت یافتہ عملہ سکریننگ  کر رہا ہے۔ اتوار کو معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا کی زیرصدارت کرونا وائرس سے بچاو کے حوالے سے جائزہ اجلاس ہوا جس میں وفاقی سیکرٹری صحت، ڈاکٹرز، ایگزیکٹو ڈائریکٹر این آئی ایچ، پاک فوج کے نمائندے اور صحت کے ماہرین نے شرکت کی ۔ترجمان وزارت صحت نے کہاکہ اجلاس میں ایران میں کرونا وائرس کیسز رپورٹ ہونے کے حوالے صورت حال کا جائزہ لیا گیا۔ ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہاکہ چمن تفتان طورخم پر تربیت یافتہ عملہ سکریننگ کر رہا ہے۔ تمام انٹری پوائنٹس پر انٹر نیشنل ہیلتھ ریگولییشن کی ہدایت کے مطابق عمل کیا جا رہا ہے۔ کوئٹہ،لاہور، کراچی ایر پورٹ پر بھی سخت سکریننگ کی جارہی ہے۔

خطرناک وائرس کی تباہ کاریاں دنیا بھر میں جا ری

چین میں کرونا وائرس سے مزید 96 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ کرونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 2 ہزار 442 ہو گئی۔ دنیا بھر میں متاثرہ افراد کی تعداد 78 ہزار 599 ہو گئی۔ چین کے علاوہ خطرناک وائرس کی تباہ کاریاں دنیا بھر میں پھیلتی جا رہی ہیں، چین میں مزید 630 افراد میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔ اٹلی میں کرونا وائرس سے 2 ہلاکتیں ہوئی ہیں جبکہ متاثرہ مریضوں کی تعداد 79 ہو گئی ہے۔ اٹلی کے وزیراعظم کا کرونا وائرس سے متاثرہ علاقوں میں آنے جانے پر پابندی کا اعلان کر دیا ہے۔ جنوبی کوریا میں بھی 123 افراد متاثر ہوئے ہیں۔ عالمی ادارہ صحت نے کہا کہ کرونا وائرس کی وبا پر قابو پانے کے امکانات کم ہو رہے ہیں۔

ایران کرونا وائرس

Leave a Reply