136

ایران نے امریکا سے مشروط مذاکرات کا عندیہ دے دیا

تہران(مانیٹرنگ ڈیسک) ایران کے صدر حسن روحانی نے ایک بار پھر نیوکلیئر پروگرام پر بات چیت

کے حوالے سے مشروط آمادگی ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ غیرقانونی پابندیاں اٹھا لے تو

ایران اب بھی اس کے ساتھ نیوکلئیر پروگرام پر بات چیت کے لیے تیار ہے۔بین الاقوامی خبر رساں

ادارے کے مطابق ریاستی ٹیلی ویژن پر براہ راست بات کرتے ہوئے ایرانی صدر حسن روحانی کا

کہنا تھا کہ اگر وہ تیار ہے کہ پابندیوں کو ایک طرف رکھ دیں تو ہم بات چیت اور مذاکرات کے لیے

تیار ہیں۔ یہ بات چیت چھ عالمی طاقتوں کے پلیٹ فارم پی فائیو پلس ون پر بھی ہوسکتی ہے۔ان چھ

عالمی طاقتوں میں امریکہ، برطانیہ، فرانس، چین، روس اور جرمنی شامل ہیں۔ یاد رہے کہ صدر

حسن روحانی نے پہلے بھی ایران سے پابندیاں اٹھانے کی شرط پر چھ عالمی طاقتوں کے پلیٹ فارم پر

مذاکرات شروع کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔اس وقت تہران نے کہا تھا اگر امریکہ ایران سے پابندیاں اٹھاتا

ہے اور معاشی دبائو کا خاتمہ کیا جاتا ہے تو ہم امریکہ سے کسی بھی وقت اور کہیں بھی بات چیت

کے لیے تیار ہیں۔ایران اور امریکہ کے درمیان کشیدگی میں اس وقت اضافہ ہوا جب گذشتہ برس

امریکی صدر نے جوہری معاہدے سے علیحدگی کا اعلان کیا۔امریکہ اور ایران کے درمیان تنائو کئی

سال سے چلا آ رہا ہے جس کی بنیادی وجہ ایران کی جانب سے یورینیم کی افزودگی ہے جس پر

امریکہ تحفظات کا اظہار کرتا رہا ہے۔

Leave a Reply