corona-virus

ایرانی نائب وزیر صحت بھی کرونا وائرس کا شکار

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

کوئٹہ،اسلام آباد، بیجنگ ،بنکاک(مانیٹرنگ ڈیسک) ایران میں کرونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے پیش

نظر پاک ایران بارڈر آج تیسرے روز بھی مکمل طور پر بند ہے، تفتان بارڈر پر طبی عملے کی جانب

سے سکریننگ کا عمل جاری ہے۔پی ڈی ایم اے کی جانب سے بارڈر پر پھنسے زائرین کے لئے

عارضی رہائشگاہ قائم کی گئی ہے جہاں بستر، کمبل، ماسک اور کھانے کا بندوبست کیا گیا ہے۔ پی ڈی

ایم اے کا کہنا ہے اس وقت بارڈر پر 270 زائرین موجود ہیں، مزید 8 ہزار زائرین جلد عارضی کیمپ

پہنچ جائیں گے، تمام سرحدی علاقوں میں طبی ایمرجنسی ہے، متعلقہ حکام کو بھی الرٹ رہنے کی

ہدایت کی گئی ہے۔وزیراعظم کے مشیر ڈاکٹر ظفر مرزا نے گفتگو میں کہا ایران میں کرونا وائرس

کے خطرات کے پیش نظر تفتان زاہدان بارڈر پر زائرین کی آمدورفت بڑا چیلنج ہے۔ادھر ملک بھرکے

ایئرپورٹس پر کرونا وائرس سے بچاؤ کے اقدامات مزید سخت کر دیئے گئے۔ پاکستان داخل ہونے

کیلئے ہیلتھ ڈکلیئریشن فارم پر کرنا لازمی قرار دے دیا گیا۔ ڈکلیئریشن فارم جمع نہ کرانے پر ائیرلائنز

کیخلاف کارروائی ہوگی جبکہ فلائٹس کو پرواز کی اجازت بھی نہیں ہوگی۔ ایران، چین اور خلیجی

ممالک کے مسافروں سے 15 دن کا سفری ریکارڈ بھی طلب کیا جائے گا۔ ادھر چین سے کروناوائرس

سے مزید 71 افراد ہلاک ہوگئے جس سے ہلاکتوں کی تعداد 2663 تک جا پہنچی ہے۔جبکہ 508 نئے

کیسز سامنے آنے کے بعد متاثرین کی تعداد 77685 ہوچکی ہے۔چین کے بعد کرونا وائرس جنوبی

کوریا میں بھی تیزی سے پھیل رہا ہے جہاں 60 نئے کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں جس کے بعد مجموعی

تعداد 900 کے قریب پہنچ گئی ہے۔تھائی لینڈ نے بھی کورونا وائرس کے 2 نئے کیسز کی تصدیق کی

ہے۔تھائی ہیلتھ حکام کے مطابق رپورٹ ہونے والے 2 مریضوں میں ایک خاتون ہیں جن کے اہل خانہ

چین کا سفر کرتے رہے ہیں۔جب کہ دوسرا مریض چینی سیاحوں کا ڈرائیور ہے، تھائی لینڈ میں

مجموعی متاثرین کی تعداد 37 ہوچکی ہے۔ویتنام میں بھی 16 افراد موذی وائرس کا شکار ہوچکے

ہیں۔ ویتنام ہیلتھ حکام کا کہنا ہے کہ 13 فروری کے بعد سے کورونا وائرس کا کوئی نیا کیس رپورٹ

سامنے نہیں آیا ہے۔ایران میں کورونا وائرس سے ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد 10 سے زائد

ہوچکی ہے جب کہ متاثرہ افراد کی تعداد 45 کے قریب ہے۔دوسری طرف ایرانی نائب وزیر صحت

میں بھی کرونا وائرس کی موجودگی کی تصدیق ہوگئی ہے۔اے ایف پی کے مطابق ایران کے

دارالحکومت تہران میں حکومت کے ترجمان علی ربیعی کے ساتھ کی جانے والی پریس کانفرنس کے

دوران نائب وزیرِ صحت ’ارج ہریرچی‘ کئی بار کھانستے رہے جبکہ انہیں پسینے بھی آرہے تھے۔بعد

ازاں سرکاری نیوز چینلز پر نائب صدر کا ویڈیو بیان چلایا گیا جس میں انہوں نے بتایا کہ ان میں

وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے۔سرکاری ٹی وی پر نشر کی جانے والی ویڈیو میں نائب وزیر صحت نے

کہا کہ ’میں بھی کورونا وائرس سے متاثرہ افراد میں شامل ہوگیا ہوں‘۔انہوں نے مزید بتایا ’مجھے

گزشتہ رات بخار تھا اور ابتدائی ٹیسٹ رپورٹس میں وائرس کی تصدیق کردی گئی ہے اور جب سے

ہی میں نے خود کو علیحدہ کمرے میں بند کرلیا ہے کچھ لمحات قبل مجھے بتایا گیا کہ میرے فائنل

ٹیسٹ میں بھی وائرس کی تشخیص کردی گئی ہے اور اب میرا اس کا علاج شروع ہورہا ہے‘۔’ارج

ہریرجی‘ نے اعلان کیا کہ میں لوگوں کو بتانا چاہتا ہوں کہ ہم اگلے چند ہفتوں میں ہی اس خطرناک

وائرس کے خلاف جاری جنگ میں یقیناً کامیاب ہوں گے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply