ایبٹ آباد تہرہ قتل، ملزم کا اعترافِ جرم و انکشاف، مگر اہم سوال جواب طلب

ایبٹ آباد تہرہ قتل، ملزم کا اعترافِ جرم اور انکشاف، مگر اہم سوال جواب طلب

Spread the love

ایبٹ آباد( جتن رپورٹر سردار یاسر احمد) ایبٹ آباد تہرہ قتل
Journalist Sardar Yaser Ahmad

صوبہ خیبرپختونخوا کے ضلع ابیٹ آباد کے سیاحتی مقام گلیات میں ڈونگا گلی کے

علاقے سیر غربی میں جنسی خواہش کی تکمیل میں ناکامی پر درندہ صفت پڑوسی

نے 75 سالہ معمر خاتون کو چھریوں کے پے در پے وار کر کے موت کے گھاٹ

اتارنے کے بعد دو کمسن بچوں کے گلے پر چھری پھیر کر انہیں ذبح کر دیا جبکہ

خود پر ہونیوالے جنسی حملے کو ناکام بنانے کے دوران شدید مجروح ہونیوالی

ممتا اپنی آنکھوں کے سامنے معصوم جگر گوشوں کو ذبح ہوتے دیکھتی رہی لیکن

کچھ نہ کرسکی-

ایبٹ آباد تہرہ قتل، ملزم کا اعترافِ جرم و انکشاف، مگر اہم سوال جواب طلبایبٹ آباد تہرہ قتل، ملزم کا اعترافِ جرم و انکشاف، مگر اہم سوال جواب طلب

اس سلسلے میں ایس پی ہیڈ کواٹرر ملک اعجاز نے ڈی ایس پی گلیات اور علاقہ

ایس ایچ او کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے صحافیوں کو بتایا کہ گزشتہ شب

چوکی چھانگلہ کے علاقے سیر غربی میں ملزم مبین ولد افضل نے اپنے پڑوسی

عامر عباسی کی عدم موجودگی پر اس کے گھر کے دروازے پر دستک دی اور

ختم درود کے سلسلے میں چاول پکانے کے لئے دیگچا مانگا، جس پر معمر خاتون

مسماۃ تاج بی بی باورچی خانہ گئی تو ملزم بھی گھر میں داخل ہو گیا اور اس کے

پیچھے باوچی خانے میں داخل ہو کر اس پر چھریوں کے پے در پے وار کر کے

اسے موت کے گھاٹ اتار دیا اور جنسی ہوس مٹانے کیلئے گھر میں موجود مقتولہ

کی بہو مسماۃ ( الف) زوجہ عامر عباسی کو مجبور کیا اور مزاحمت پر اس پر بھی

چھریوں کے وار شروع کر دئیے، شور شرابے پر خاتوں نے دونوں کمسن بیٹے 3

سالہ ذیشان اور 5 سالہ غازیان جائے وقوعہ پر آ گئے، ملزم مبین ان کی طرف

متوجہ ہوا تو خاتون چھپ گئی اور ملزم مبین نے اس کے سامنے ہی دونوں معصوم

بچوں کے گلے اسی چھری سے کاٹ دیئے جس سے معصوم پھول تڑپ تڑپ کر

خالق حقیقی سے جا ملے-

=-،-= بچوں کی ماں زندہ مگر شدید زخمی ہیں، ایس پی ہیڈ کوارٹر

ایبٹ آباد تہرہ قتل، ملزم کا اعترافِ جرم و انکشاف، مگر اہم سوال جواب طلب

ایس پی ہیڈ کواٹرز نے بتایا ارتکاب جرم کے بعد ملزم فرار ہو گیا، تاہم واقعہ میں

بچوں کی ماں شدید زخمی ہونے کے باوجود زندہ تھی جسے اہل علاقہ نے فوری

طبی امداد کے لئے ہسپتال منتقل کر دیا جہاں اس نے پولیس کو اپنا بیان ریکارڈ کرا

دیا ہے- ہسپتال ذرائع کے مطابق مجروح کے گلے سمیت جسم کے مختلف حصوں

پر چھریوں کے وار کئے گئے جس کے باعث اسکی حالت نازک ہے تاہم مجروحہ

کو انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں منتقل کر دیا گیا ہے-

=-،-= ملزم مبین کو جنگل سے آلہ قتل سمیت گرفتار کیا، ایس پی ملک اعجاز

ملک اعجاز ایس پی ہیڈ کواٹرز نے صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے مزید بتایا

پولیس نے اطلاع ملتے ہی معصوم بچوں اور ان کی دادی کی لاشیں پوسٹمارٹم کے

لئے مردہ خانہ منتقل کرنے کے بعد ملزم کی تلاش شروع کردی اور اسے جنگل

سے آلہ قتل سمیت گرفتار کر لیا- تہرے قتل کی واردات کے خبر جنگل کی آگ کی

طرح پورے گلیات میں پھیل گئی، معصوم پھولوں کے بیمانہ قتل پر ہر دل غمزدہ

اور ہر آنکھ اشکبار ہے-

=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

دوران پریس کانفرنس انہوں نے بروقت کارروائی کرنے پر وہ ڈی ایس پی گلیات

اور علاقہ ایس ایچ او کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ڈی پی او ابیٹ آباد کی

طرف سے توصیفی اسناد و نقد انعام دینے کا بھی اعلان کیا۔ جسے بعد ازاں اہلیان

علاقہ نے راولپنڈی ہسپتال منتقل کیا جہاں پر خاتون نے اپنے پڑوسی ملزم مبین

کیخلاف پولیس کو بیان ریکارڈ کرادیا-

=-،-= کیا بچوں کو ماں نے قتل کروایا – – – ؟

ایبٹ آباد تہرہ قتل، ملزم کا اعترافِ جرم و انکشاف، مگر اہم سوال جواب طلب

دریں اثناء جب ملزم مبین کو میڈیا کے سامنے پیش کیا گیا تو اس نے اپنے جرم کا

اعتراف کرتے ہوئے کہا وہ اس گھناؤنے جرم پر نادم ہے، تاہم صحافی سردار یاسر

کے سوال پر ملزم نے تمام کہانی کا رخ دوسری جانب موڑتے ہوئے ایک عجیب

انکشاف کر ڈالا کہ اس کے مدعیہ مقدمہ مجروحہ پڑوسن ( الف ) سے چار ماہ قبل

جنسی تعلقات استوار ہوئے تھے، گزشتہ روز اسی کے بلانے پر گھر میں داخل ہوا

اور پھر اسی کے کہنے پر اس کی ساس کو قتل کیا- بالفرض ملزم کا بیان درست

بھی ماں لیا جائے تو اہم سوال یہ پیدا ہوتا ہے کیا ملزم مبین نے دو معصوم بچوں

کو بھی ماں کے کہنے پر ذبح کیا ؟۔

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

واضح رہے کہ متاثرہ خاتون کا شوہر روزگار کے سلسلے میں راولپنڈی میں مقیم

ہے اور مہینے دو مہینے بعد اپنے گھر چکر لگاتا ہے اور واردات کے روز بھی وہ

گھر پر موجود نہ تھا-

ایبٹ آباد تہرہ قتل ، ایبٹ آباد تہرہ قتل ، ایبٹ آباد تہرہ قتل ، ایبٹ آباد تہرہ قتل

Leave a Reply