Newark, FM Shah Mehmood Qurashi Talks With Media

اپوزیشن کا مطالبہ تسلیم، حکومت نیشنل ایکشن پلان پر بریفنگ کیلئے تیار

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

ملتان(جے ٹی این آن لائن)حکومت نے نیشنل ایکشن پلان پر بریفنگ سے متعلق

اپوزیشن کا مطالبہ تسلیم کرلیا، وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے پورے ایوان کو

بریفنگ دینے پر رضامندی ظاہر کردی۔ ملتان میں گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے

کہا وہ اپوزیشن رہنماوں کے پاس جانے کو بھی تیار ہیں، بلاول تحریری طور پر

بتائیں وہ کیا چاہتے ہیں۔ بلاول بھٹو کے بیان پر آصف علی زرداری اور شہباز

شریف سے بات کی، آصف علی زرداری اور شہباز شریف کو نیشنل سیکیورٹی

پر مل بیٹھنے کیلئے خط لکھا ہے ۔ پاکستان کا ایٹمی پروگرام بالکل محفوظ ہاتھوں

میں ہے جسے کسی قسم کے خطرے کا کوئی سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، بھارت

سفارت کاری کے ذریعے پاکستان کو تنہا کرنے کی کوشش کر رہا ہے، بھارت

میں الیکشن تک اتار چڑھاؤ دکھائی دیگا، ہمیں مکار دشمن سے مکمل چوکنا رہنا

ہے، ہم اپنا دفاع کریں گے ، موجودہ حالات میں پاکستانی پارلیمنٹ کا یکجا ہونا

ملک کے مفاد میں ہے، اپوزیشن جماعتیں آئیں، مل کر بیٹھیں، تحریری یا زبانی

تجاویز دیں، مجھے پورے ایوان کوبریفنگ دینے پرکوئی اعتراض نہیں، بلاول

بھٹو زر داری بتائیں کالعدم تنظیموں کیخلاف کیا اقدامات اٹھائیں،اپنی اقلیتوں کا پورا

دفاع کریں گے، اگر کسی اقلیتی کے ساتھ زیادتی ہوئی تو ہم ساتھ دیں گے، دوہرا

معیار نہیں رکھتے۔ مودی کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہیں تاہم ہمیں مکار دشمن

سے مکمل چوکنا رہنا ہے، ہم امن کے راستے پر چلنے کو تیار ہیں، پہلے بھی

امن کو ترجیح دی، اب بھی دیتے ہیں۔ بھارت کئی معاملات کو سیکیورٹی کونسل

میں لے جانا چاہتا ہے اور چین نے ہمارے مشکل وقت میں ہمارا ساتھ دیا، چین کل

بھی پاکستان کے ساتھ تھا اور آج بھی ساتھ ہے، بہت سے ممالک بھارت کو اقوام

متحدہ میں سپورٹ کررہے ہیں اس پر پاکستانیوں کو متحد ہونا ہوگا، صرف بیانات

سے ملکی مسائل حل نہیں ہوتے۔ پیپلز پارٹی نے (ن) لیگ کے ساتھ سیاسی اتحاد

کا فیصلہ کرلیا ہے تو یہ ان کا سیاسی حق ہے، اللہ تعالیٰ نوازشریف کو صحت

یاب کرے، ہرگز نہیں چاہیں گے نواز شریف کوکوئی تکلیف پہنچے، ان کو مکمل

صحت کی سہولیات دی جارہی ہے۔ حکومت نیشنل ایکشن پلان کے سیاسی جزو

پرعملدرآمد کیلئے آگے بڑھنا چاہتی ہے ، تمام سیاسی جماعتوں کی مشترکہ ذمہ

داری ہے کہ وہ اس قومی مسئلے پر سیاسی اتفاق رائے پیدا کریں ،اپوزیشن چاہتی

ہے اس معاملے پر پارلیمان میں بات کی جائے تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں کیونکہ

پارلیمنٹ سب سے بہترین فورم ہے. اس سے پہلے کہ کوئی پاکستان پر انگلی

اٹھائے ہمیں اپنے تمام مسائل کا حل خود نکالنا ہوگا.

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply