186

مشرف کیخلاف خصوصی عدالت کا فیصلہ بڑا ظلم، اٹارنی جنرل پاکستان

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اسلام آباد(جتن آن لائن سٹاف رپورٹر) اٹارنی جنرل آف پاکستان

اٹارنی جنرل آف پاکستان انور منصور خان نے سابق صدر اور آرمی چیف جنرل (ر) پرویز مشرف کو خصوصی عدالت کی جانب سے سنگین غداری کیس میں سزائے موت کے فیصلے کو غلط قرار دیدیا۔ مزید پڑھیں

بیان ریکارڈ کیے بغیر سزا سنانا ناقابل معافی، انور منصور

خصوصی عدالت نے قبل ازیں سابق صدر اور آرمی چیف جنرل (ر) پرویز مشرف کو غدار قرار دیتے ہوئے سزائے موت کا حکم سنایا۔ اٹارنی جنرل آف پاکستان انور منصور خان نے کہا کہ پرویزمشرف کو سزائے موت دینے کا فیصلہ غلط ہے- میں واضح طور پر کہتا ہوں اس سے زیادہ ظلم کسی کے اوپر نہیں ہوسکتا- یہ ایسی بات ہے جیسے کسی کے بنیادی حق کو مکمل نظر انداز کردیا جائے۔ انہوں نے کہ ایک شخص کو بیان ریکارڈ کیے بغیر پھانسی کی سزاسنانے پر معافی کی گنجائش نہیں- ایک شخص بیمار ہے اسے کہا جاتا ہے کہ آپ یہاں پر آکر بیان دیں اور ایک شخص جو بیمار نہیں ہے، اسے کہا جاتا ہے کہ آپ باہر چلے جائیں۔

جو غلط ہے اسے غلط کہنا چاہیے، مشرف کو اپیل کا حق حاصل

انورمنصور خان کا مزید کہنا تھا فیصلہ جو غلط ہے اسکو غلط کہیں گے اور کہنا چاہیے، جو درخواست دی گئی وہ آج سے ڈیڑھ سال پہلے دی گئی تھی- درخواست یہ تھی کہ سب کو بلایا جائے جس میں جسٹس ڈوگر اور دیگر بھی شامل تھے لیکن اس درخواست کو انھوں نے رد کیا تھا یا ڈس مس کیا تھا- انہوں نے مزید کہا کورٹ کا یہ کہنا کہ یہ اتنے عرصے کے بعد آئے ہیں یہ مناسب نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ پرویز مشرف کے پاس اس فیصلے کیخلاف سپریم کورٹ میں اپیل کا حق موجود ہے۔

Leave a Reply