61

آٹا ،چینی ، گھی، دالیں سستی ،کابینہ نے 15ارب روپے کے ریلیف پیکیج کی منظوری دے دی

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ) وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ہونے والے

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں مہنگائی کے ستائے عوام کو ریلیف دینے کیلئے 15

ارب روپے کے پیکیج کی منظوری دی گئی۔اجلاس میں کابینہ نے اشیائے

خورونوش کی قیمتوں میں کمی کی منظوری دی جس کے بعد یوٹیلٹی اسٹورز پر

آٹا، گھی، دالیں، چینی اور چاول مارکیٹ سے 10 سے 25 فیصد کم ریٹ پر ملیں

گے۔وفاقی کابینہ نے 5 ماہ میں یوٹیلٹی اسٹورز کو 10 ارب روپے جاری کرنے کی

بھی منظوری دی، اس کے علاوہ ماہ رمضان میں یوٹیلٹی اسٹورز کو 5 ارب روپے

الگ سے ملیں گے۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں وزیر دفاع پرویز خٹک، وزیر

سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری اور وزیر برائے کشمیر، گلگت و بلتستان امور

علی امین گنڈا پور سمیت کئی وزراء￿ نے یوٹیلٹی اسٹورز پیکج کی مخالف کی۔

یوٹیلٹی پیکج کی مخالفت کرنے والے وزراء کا مؤقف تھا کہ یوٹیلٹی اسٹورز کو

اربوں روپے دینے کے بجائے پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں کم کی جائیں۔ ملک بھر

کے 4 ہزار یوٹیلٹی اسٹورز پر کھانے پینے کی بنیادی اشیاء سستی فراہم کی جائیں

گی۔ جولائی میں وفاقی حکومت نیا پیکج متعارف کرائے گی، جس میں 3 اقسام

کے چاول، 3 اقسام کا پکوان تیل اور 3 اقسام کی دالیں دستیاب ہوں گی۔اجلاس میں

فیصلہ کیا گیا کہ یوٹیلٹی سٹورز پر دالوں کی قیمت پر 15 سے 20 روپے فی کلو

رعایت دی جائے گی۔ یوٹیلٹی اسٹورز پر 20 کلو آٹے کا تھیلا 805 روپے میں

دستیاب ہوگا۔ چینی کا سرکاری نرخ 70 روپے فی کلو مقرر کر دیا گیا ہے جبکہ

کھانے کا تیل 175 روپے فی کلو میں ملے گا۔اس کے علاوہ کامیاب جوان پروگرام

کے ذریعے 50 ہزار منی یوٹیلٹی سٹورز کیلئے قرض دیے جائیں گے۔ ان سٹورز

پر اشیائے خورونوش سرکاری ریٹ پر مہیا کی جائیں گی۔وفاقی کابینہ نے نجی

شعبے کو چینی درآمد کرنے کی بھی اجازت دے دی ہے۔ نجی کمپنیاں ریگولیٹری

ڈیوٹی ادا کرکے چینی درآمد کر سکیں گی۔ذ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں

وزیراعظم عمران خان کھاد کی کمپنیوں کی جانب سے قیمتیں کم نہ کرنے پر برہم

ہوئے اور کہا کہ وزارت تجارت کھاد کمپنیوں کو مقررہ ریٹ کا پابند بنائے۔ میں

کسانوں کا استحصال نہیں ہونے دوں گا۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ

مہنگائی کا معاملہ روزانہ کی بنیاد پر خود مانیٹر کروں گا۔ مافیا کی سہولت کاری

کرنے والے بھی جرم میں برابر کے شریک ہیں۔دوسری جانب عوام نے یوٹیلٹی

سٹورز پر پندرہ ارب روپے کا پیکج مسترد کرتے ہوئے اشیائے خورونوش کے

معیار پر تحفظات کا اظہار کر دیا ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ سرکاری سٹورز پر

سبسڈی دینے کا کوئی فائدہ نہیں، حکومت عام مارکیٹ میں آٹا، چینی اور دالیں

سستی کرے، حکومتی اقدامات آٹے میں نمک کے برابر بھی نہیں ہیں۔

Leave a Reply