0

آسٹریلیا کے کم عمر ترین ارب پتی شخص کو اس کے ایک غلط فیصلے نے کنگال کر دیا

Spread the love

آسٹریلیا کے کم عمر ترین ارب پتی شخص کو اس کے ایک غلط فیصلے نے کنگال کر دیا۔ میل آن لائن کے مطابق ناتھن ٹنکلر نامی اس شخص کے پاس اربوں ڈالر کی دولت تھی لیکن اس نے کوئلے کی صنعت اور فٹ بال کلبوں سمیت کئی دیگر شعبوں میں بلاسوچے سمجھے سرمایہ کاری کر ڈالی اور اس کی تمام رقم ڈوب گئی۔ نیو سائوتھ ویلز کے شہر ہنٹر ویلی کے رہائشی ناتھن کا کہنا ہے کہ ’’میں اپنی سرمایہ کاری کے حوالے سے حد سے زیادہ خوداعتمادی کا شکار ہو گیا تھا۔ میں سمجھتا تھا کہ میں جہاں سرمایہ کاری کروں گا مجھے منافع ہو گا لیکن نتیجہ اس کے برعکس نکلا۔‘‘رپورٹ کے مطابق ناتھن نے 32سال کی عمر میں میکارتھر کول میں 10لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری کی اور چند سال بعد اس نے کئی گنا زیادہ قیمت پر اپنے حصص فروخت کردیئے۔ ان سے اسے 442ملین ڈالر کی رقم حاصل ہوئی۔ اس نے خاطرخواہ تجربہ نہ ہونے کے باوجود اس رقم کا بڑا حصہ کوئلے ہی کی صنعت میں لگا دیا لیکن چند ماہ بعد ہی کوئلے کی قیمت انتہائی کم ہو گئی اور اس کی سرمایہ کاری ڈوب گئی۔ اس کے علاوہ اس نے 2 فٹ بال کلبوں میں بھی سرمایہ لگایا۔2011ء میں اس کے پاس 1.13ارب ڈالر کی دولت تھی لیکن 2016ء میں وہ کنگال ہو چکا تھا۔ ناتھن کا کہنا ہے کہ ’’میں نے اپنے ایک غلط فیصلے کی وجہ سے اپنی تمام دولت گنوا دی۔ اب مجھے دوبارہ صفر سے کام شروع کرنا پڑے گا۔‘‘ واضح رہے کہ ناتھن اس طرح اچانک امیر ہونے سے پہلے الیکٹریشن کا کام کرتا تھا۔

Leave a Reply