0

انڈونیشین پولیس پاکستانی پولیس سے بھی دو ہاتھ آگے

Spread the love

انڈونیشیا پولیس نے ملزم سے اعتراف جرم کرانے کیلئے اس پر سانپ چھوڑنے جیسا غیر قانونی تفتیشی طریقہ کار اپنانے پر معافی مانگ لی.

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق انڈونیشیا پولیس نے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو پرعوام سے معافی مانگ لی ۔ اس ویڈیو میں تفتیشی اہلکار تھانے میں ایک ملزم پرسانپ پھینک کر ڈرا دھمکا رہے تھے۔

ملزم پر ایک شہری کا موبائل چھیننے کا الزام تھا تاہم ملزم اپنے جرم کا اعتراف نہیں کر رہا تھا جس پر تفتیشی اہلکاروں نے ہتھکڑی لگے ملزم پرسانپ چھوڑ دیا تاکہ وہ خوفزدہ ہوکر اپنا جرم مان لے۔

مقامی پولیس چیف نے ویڈیو وائرل ہونے کے بعد عوام سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ تفتیشی اہلکاروں کا طریقہ کار غیر پیشہ ورانہ تھا تاہم سانپ زہریلا نہ ہونے کے سبب ملزم کی جان کو کوئی خطرہ نہیں تھا اس لیے اقدام قتل کی دفعہ عائد نہیں ہوسکتی۔

انسانی حقوق کی تنظیموں نے ویڈیو وائرل ہونے پر پولیس کے تفتیش عمل کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے سخت احتجاج کیا تھا جب کہ سوشل میڈیا پر بھی صارفین نے پولیس کے رویے کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

Leave a Reply