انتخابی عمل کے بائیکاٹ کے اعلان کے بعد مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال

Spread the love

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک ) بھارت میں مرحلہ وار عام انتخابات کا آغاز ہو گیا جس

کے تحت 19ریاستوں اور مقبوضہ کشمیر کی دو نشستوں کیلئے رائے شماری کا

سلسلہ جاری ہے تاہم حریت قیادت کی جانب سے انتخابی عمل کے بائیکاٹ کا

اعلان کے بعد مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال کی گئی ، کشمیر میڈیا سروس کے

مطابق بھارت میں الیکشن کے پہلے مرحلے میں 19ریاستوں اور کشمیر میں

91نشستوں پر ووٹنگ کا عمل شروع ہوگیا ۔ مجموعی طور پر 450سے زائد

سیاسی جماعتیں الیکشن میں حصہ لے رہی ہیں تاہم 6 بڑی جماعتیں ملک پر

حکمرانی کیلئے آمنے سامنے ہیں جن میں بی جے پی اور کانگریس نمایاں ہیں، جن

ریاستوں میں پولنگ ہو رہی ہے، ان میں آندھرا پردیش، ارونچل پردیش، آسام،

بہار، چھتیس گڑھ، مہاراشٹرا، ، مانیپور، میزورام، ناگالینڈ، اودیشا، سکم، تلنگانا،

اترپردیش، اترکھنڈ اورمغربی بنگال شامل ہیں۔مقبوضہ کشمیر کی دو نشستو ں

کیلئے بھی پولنگ جاری ہے تاہم حریت قیادت نے نام نہادالیکشن کابائیکاٹ کر

رکھا ہے۔ مقبوضہ وادی میں مکمل ہڑتال کے باعث کا ر وباری مراکز بند اور

سڑکوں پر ٹریفک معمول سے کم ہے۔دوسرے مرحلے میں 18اپریل کو 13

ریاستوں میں پولنگ ہوگی جبکہ کل 7 مر حلو ں میں ہونیوالے انتخابات کیلئے

ووٹنگ 19مئی تک جاری رہے گی،نتائج کا اعلان 23 مئی کو ہوگا۔ بھارت کی

پارلیمان کی 543 نشستیں ہیں اور حکومت سازی کیلئے 272 نشستیں درکار ہیں۔

Leave a Reply