سی پیک شفاف نہیں، چین پاکستان کا قرض معاف یا چُھوٹ دے، امریکہ

امریکی کھرب پتی شخصیات کا ملکی مفاد میں مزید دولت ٹیکس عائد کرنے کا مطالبہ

Spread the love

واشنگٹن(جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ)

امریکہ کے 19 کھرب پتی افراد نے مطالبہ کیا ہے کہ ان پر مزید دولت ٹیکس عائد

کیا جائے تاکہ معاشرے میں معاشی عدم مساوات میں کمی اور ملکی آمدنی میں

اضافہ ہو۔ 2020 کے امریکی انتخابات کے لیے متوقع امیدواروں کے نام اپنے خط

میں انہوں نے کہا ہے کہ امیروں پر مزید ٹیکس لگانا امریکہ کی اخلاقی اور

معاشی ذمہ داری ہے۔ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق خط میں مطالبہ

یہ بھی پڑھیں: ٹیکسوں میں اضافے کا خوف، لندن کی امیر ترین شخصیات کا ملک چھوڑنے کا فیصلہ

کیا گیا ہے کہ امریکی خزانے میں آنے والے اضافی ڈالر متوسط طبقے کے بجائے

امرا کی جیبوں سے نکلنے چاہئیں۔ خط پر دستخط کرنے والے کھرب پتیوں میں

مشہور لبرل انسان دوست جارج سوروس اور ان کے بیٹے کے علاوہ فیس بک کے

شریک بانی کرس ہیوز بھی شامل ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اس طرح اگلے 10 برسوں

میں تین ہزار ارب ڈالر کی رقم اکٹھی ہو سکتی ہے جسے صاف توانائی، بچوں کی

دیکھ بھال، انفراسٹرکچر کی ترقی اور کم آمدنی والے خاندانوں کو سہولیات کی

مزید پڑھیں: پاکستان میں کسی سیکٹر کا ٹیکس دینے پر آمادہ نہ ہونا افسوسناک، حفیظ شیخ

فراہمی پر خرچ کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے سینیٹر ایلزبتھ وارن کی اس تجویز کی

حمایت کی جس میں کہا گیا تھا کہ 5 کروڑ ڈالر سے زیادہ اثاثے رکھنے والوں پر

2 فیصد جبکہ ایک ارب ڈالر سے زیادہ اثاثوں کے مالکان پر 3 فیصد ٹیکس لگایا

جائے۔ سینیٹر ایلزبتھ وارن نے اندازہ لگایا تھا کہ اس نئے ٹیکس سے صرف

75000 امیر خاندان متاثر ہوں گے۔ کھرب پتیوں نے اپنے خط میں کہا ہے کہ اس

ٹیکس کے ذریعے ہم مشترکہ مستقبل کو لاحق بڑے چیلنجز کو بھی با آسانی حل کر

سکتے ہیں۔

Leave a Reply