khabar i Hai jtnonline

امریکی فوج میں جنسی جرائم بڑھ گئے، 73 فیصد افسران ملوث

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن نیوز) امریکی فوج جنسی جرائم

امریکی محکمہ دفاع کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال فوج میں جنسی جرائم کی وارداتوں میں قدرے اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

——————————————————————————
یہ بھی پڑھیں : ڈارک ویب کا ہیڈ کوارٹر ہالینڈ،71 فیصد بچوں کی ” گندی فلموں“ کا میزبان
——————————————————————————
جنسی جرائم کی وارداتوں میں مجموعی طور پر 3 فیصد اضافہ

تفصیلات کے مطابق امریکی محکمہ دفاع کی سالانہ رپورٹ کے اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ سال 2019ء میں ملک کی تنیوں مسلح افواج میں جنسی جرائم کی وارداتوں میں مجموعی طور پر 3 فیصد اضافہ دیکھا گیا۔

جنسی جرائم کی وارداتوں میں امریکی فضائیہ سر فہرست

رپورٹ کے مطابق جنسی جرائم کی وارداتوں میں سب سے زیادہ اضافہ امریکی فضائیہ میں ہوا ہے، جو کہ 9 فیصد ہے۔

امریکی بحریہ میں 5، بری فوج میں 2 فیصد جنسی جرائم بڑھ گئے

دوسری جانب امریکی بحریہ میں 5 فیصد، جبکہ بری فوج میں 2 فیصد جنسی جرائم کی وارداتوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

73 فیصد جنسی جرائم کے واقعات میں سینئر ساتھی یا افسران ملوث

سالانہ رپورٹ میں امریکی محکمہ دفاع نے یہ بھی بتایا ہے، کہ جنسی جرائم کی 73 فیصد وارداتوں کے واقعات میں سینئر ساتھی یا افسران ملوث ہیں۔

قارئین : جے ٹی نیٹ ورک نیوز اچھی لگے تو اپنے دوستوں کیساتھ ضرورشیئر کریں، اپڈیٹ رہیں ہمیں سوشل میڈیا پر فالور بن کر،شکریہ

2011ء کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا، کہ امریکی فوج میں خواتین کو، لڑائی میں مارے جانے کے مقابلے میں، ساتھی فوجیوں کے ذریعہ جسمانی وجنسی زیادتی کے نشانہ بننے کے زیادہ امکانات ہیں ۔ پنٹاگون کے 2012ء کے ایک سروے میں بتایا گیا تھا کہ، اس سال تقریبا 26،000 خواتین اور مردوں پر جنسی زیادتی کی گئی تھی۔ ان میں سے صرف 3،374 معاملات رپورٹ ہوئے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply