78

امریکی فوجی اڈے پرداعش کا راکٹوں سے حملہ

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک)افغانستان میں امریکی فوج کے اہم اڈے بگرام ایئر فیلڈ پر5 راکٹ فائر کئے گئے تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا، امریکی فوجی اتحاد اور نیٹو نے واقعے کی تصدیق کردی ،طالبان نے حملے میں ملوث ہونے کو مستردجبکہ داعش نے ذمہ داری قبول کرلی۔افغانستان میں امریکی فوج کے اہم اڈے بگرام ایئر فیلڈ پر جمعرا ت کی صبح 5 راکٹز فائر کئے گئے لیکن اس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا، امریکہ کی زیر قیادت فوجی اتحاد اور نیٹو زیر قیادت ریزولوٹ سپورٹ (آر ایس)مشن نے بھی اس کی تصد یق کر دی ہے۔

واقعے کے کچھ گھنٹوں کے بعد ریزولوٹ سپورٹ مشن نے اپنے ٹوئٹ اکانٹ پر کہا کہ گزشتہ صبح بگرام ایئر فیلڈ پر 5راکٹ فائر کیے گئے جس سے کوئی جانی نقصان یا کوئی زخمی نہیں ہوا ۔ ہمارے اے این ڈی ایس ایف (افغان نیشنل ڈیفنس اینڈ سیکیورٹی فورسز)شراکت دار واقعے کی تحقیقا ت کر رہے ہیں۔تاہم فوجی اتحاد نے مزید تفصیلات فرا ہم نہیں کیں۔افغان وزارت داخلہ کے ترجمان طارق آرائیں نے بھی واقعہ تصدیق کی اور کہا مقامی وقت کے مطابق صبح 5 بجکر 40 منٹ پر ضلع بگرام کے نواحی علاقے قلاچہ میں ایک کار پر سوار نامعلوم افراد نے بگرام ایئر فیلڈ کی طرف 5 راکٹ فائرکئے لیکن اس سے جان و مال کو کسی قسم کا کوئی نقصان نہیں ہوا۔

بگرام ایئر فیلڈ کابل سے 50 کلومیٹر شمال میں افغانستان میں امریکہ کا ایک اہم فوجی اڈہ ہے جہاں لاتعداد عسکریت پسندوں اور مجرموں سمیت ہزاروں طالبان حمایتیوں کو افغان حکومت کے زیر انتظام جیل میں موجود ہیں ۔ادھرطالبان کے ترجمان ذبیع اللہ مجاہد نے اپنے ٹوئٹ اکائونٹ پر کہا کہ بگرام ایئر بیس پر ہونیوالے حملے کا طالبان مجاہدین کیساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔تاہم دہشتگردی سے متاثرہ افغانستان کے کچھ حصوں میں سرگرم داعش((آئی ایس)کی تنظیم نے حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔یہ پہلا موقع ہے جب سخت گیر آئی ایس گروہ نے افغانستان میں کسی امریکی فوجی اڈے کو نشانہ بنانے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

Leave a Reply