ٹرمپ انتظامیہ نے اپنے تین شہروں کو ’’ انتشار پسند ‘‘ قرار دیدیا

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن نیوز) امریکی شہر انتشار پسند

امریکہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ انتظامیہ نے اپنے تین شہروں نیو یارک، سیاٹل اور

پورٹ لینڈ کو ’’انتشار پسند‘‘ شہر قرار دے دیا ہے۔ محکمہ انصاف کے ذرائع

کے مطابق ان تینوں شہروں کی انتظامیہ نے حکومت مخالف اور نسل تعصب

کیخلاف احتجاجی مظاہرین کو گرفت میں لانے کی بجائے ان کو کھلی چھٹی

دے رکھی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ٹرمپ کا سپریم کورٹ کی خاتون جج کی خالی نشست پر خاتون منتخب کرنے کا اعلان
—————————————————————————————————-

وفاقی حکومت شہریوں او ریاستوں کی انتظامیہ کو ضروری فنڈ فراہم کرتی ہے

لیکن اگر مقامی انتظامیہ امن و امان کے قیام میں وفاقی حکومت کی کوششوں

میں مدد نہیں دیتی تو پھر اسے اختیار ہے کہ ان کا وفاقی فنڈ بند کردے۔ یاد رہے

کہ رواں ماہ کے آغاز میں صدر ٹرمپ نے محکمہ انصاف کو ایک میمو جاری

کیا تھا جس میں اسے ہدایت کی تھی کہ وہ معلوم کرے کن شہروں یا ریاستوں

کی انتظامیہ ڈیموکریٹک پارٹی کی قیادت میں حکومت مخالف مظاہرین کو قابو

کرنے کیبجائے انہیں شہ دیتی ہے۔

اگلے مرحلے میں ان شہروں کے وفاقی فنڈ بند کرنے کا اعلان متوقع

صدر ٹرمپ نے خبردار کیا تھا کہ ایسی مقامی انتظامیہ کے وفاقی ٹنڈ بند

ہوسکتے ہیں اب اسی ہدایت کے مطابق محکمہ انصاف نے نیو یارک سٹی،

واشنگٹن ریاست کے شہر سیاٹل اور اوریگن ریاست کے شہر پورٹ لینڈ کو

پہلے مرحلے میں ’’انتشار پسند‘‘ قرار دیا ہے۔ توقع ہے کہ اگلے مرحلے میں ان

کے وفاقی فنڈ بند کرنے کا اعلان کیا جائے گا۔

شہریوں کے ٹیکس ضائع کرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ اٹارنی جنرل

محکمہ انصاف کے سربراہ اٹارنی جنرل ولیم بر نے اس موقع پر ایک بیان میں

کہا ہے کہ ان تین شہروں نے خاص طور پر تشدد اور املاک کو نقصان

پہنچانے کے اقدامات کی اجازت دی اور شرپسندوں کی مجرمانہ سرگرمیوں کو

کچلنے کیلئے مناسب کارروائیاں کرنے سے انکار کیا۔ اٹارنی جنرل نے واضح کیا

کہ امریکی شہریوں کے ٹیکس ڈالر کو اس طرح ضائع کرنیکی اجازت نہیں دی

جا سکتی۔

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

امریکی شہر انتشار پسند

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply