Amrika President Donald Trump Talking with Media 147

امریکی بحریہ کے سربراہ کوٹرمپ نے عہدے سےفارٍغ کر دیا

Spread the love

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے شدید تنازعے کے بعد

امریکی بحریہ کے سربراہ رچرڈ اسپنسر کو عہدے سے فارغ کردیا گیا۔تفصیلات

کے مطابق امریکی نیوی کے افسر ایڈورڈ گلیگر کی ایک تصویر سا68%D ے8%C ۋ%ت
ڌ
D8A
ج %D ں8و %DFع %A%لߩ بت 869%D د8ک %D3ت %1%ښے 928%D ،Aج ة ةع %D9
م %7%

D8Aةو %D6و %8%D81%A8 %1 ے8%C%D95ۈا %DA%8%ا818ٹ %AA %B%وA7A%DC%B%۔B18Ռ %89 %8%بB38%D1ا %7%DBFتر ک
%0D
%7%D97بب %D7%A%ر8CBة %88%0 ٘%دB99է %88 %9%یB18־%%D وے A78%D ق9%Bعینات فوجی افسر کے

تنازعے اور امریکی صدر سے مخالفت پر بحری سربراہ رچرڈ اسپنسر کو عہدے

سے ہٹا دیا۔امریکی نیوی افسر ایڈورڈ گلیگر کو داعش کے 17 سالہ نہتے قیدی کو

قتل کرنے اور اس کی لاش کے ساتھ تصاویر بنانے کے مقدمے کا سامنا تھا، اس

معاملے پر امریکی صدر نے مداخلت کرتے ہوئے ایڈورڈ گلیگر کی حمایت کی

جس کے ردعمل میں نیول چیف رچرڈ اسپنسر نے ٹرمپ کے خلاف بیان داغا اور

کہا ٹرمپ کیس میں مداخلت سے گریز کریں۔انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ ٹرمپ

ملیٹری کیسز میں مداخلت کررہے ہیں، انہیں نظم وضبط کی سمجھ بوجھ نہیں ہے۔

رچرڈ اسپنسر کے مطابق کسی بھی شدت پسند کے ساتھ اس طرح تصویر بنانا

فوجی قواعد وضوابط کی خلاف ورزی ہے جس پر ایڈورڈ گلیگر کی تنزلی کی گئی

تھی۔بحری افسر کے خلاف محکمہ جاتی کارروائی پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ

بھی کھل کر سامنے آئے اور نیوی افسر کی حمایت کی، بعد ازاں ٹرمپ نے ایڈورڈ

گلیگر کو گزشتہ ہفتے دوبارہ عہدے پر بحال کر دیا تھا، اور اب نیول چیف کو فارغ

کردیا گیا ہے۔

Leave a Reply