oh my God jtn-online

کرونا وائرس کے بعد امریکہ اور چین میں ویکسین کی جنگ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

واشنگٹن،بیجنگ(جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) امریکہ چین ویکسین جنگ

اطلاعات کے مطابق ایف بی آئی سمیت امریکی انٹیلی جنس اداروں کو شبہ ہے کہ

چین اور ایران کرونا وائرس کے علاج و روک تھام کیلئے امریکہ میں ویکسین اور

ادویات کی تیاری کے ڈیٹا کو مکمل طور پر ہیک کر چکے ہیں، یا کرنے کی

کوششوں میں مصروف ہیں۔

—————————————————————————–
یہ بھی پڑھیں : کرونا وائرس کیلئے ویکسین کی تیاری2021ء سے پہلے ناممکن
—————————————————————————–

امریکی میڈیا میں یہ خبریں گردش کر رہی ہیں کہ وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف بی

آئی) سائبر سکیورٹی ماہرین اور انٹیلی جنس کمیونٹی اس سلسلے میں تفتیش کر

رہے ہیں۔ تاہم امریکی حکومت کی طرف سے باقاعدہ الزامات چند روز تک سا

منے آنے کے امکان ہیں۔ چینی حکومت نے پہلے ہی ان کی تردید کرتے ہوئے

انہیں بے بنیاد قرار دیا ہے اور بتایا ہے کہ ویکسین کی تیاری میں چین کا کردار

سرفہرست ہے۔

امریکی ڈیٹا ہیک کرنیوالوں کا تعلق چین اور ایران سے ہے، امریکی میڈیا

نیویارک ٹائمز اور وال سٹریٹ جرنل سمیت امریکی میڈیا کے ذریعے یہ اطلاعات

آرہی ہیں کہ اگرچہ امریکی حکومت نجی اداروں کے تعاون سے کرونا وائرس کی

ویکسین اور علا ج کی ادویات تیار کر رہی ہے، لیکن یہ سارا ڈیٹا اور معلومات

ہیک کرنے کی کوششیں بھی ہو رہی ہیں۔ مبینہ طور پر زیادہ تر ہیکرز کا تعلق

چینی حکومت سے ہے، اور کچھ کا تعلق ایرانی حکام سے بھی ہو سکتا ہے۔

انٹیلیکچوئل پراپرٹی رائٹس بھی ہیکرز کا ہدف

ایف بی آئی اور داخلی سلامتی کا محکمہ دونوں چینی ہیکروں کی کوشش سے

متعلق انتباہ جاری کرنیوالے ہیں جبکہ حکومتیں اور نجی فرمیں کووِیڈ 19 کے

علاج کیلئے ویکسین کی تیاری میں دن رات ایک کیے ہوئے ہیں۔ ہیکر اپنے حملوں

میں کووِیڈ19 کی ٹیسٹنگ اور علاج سے متعلق معلومات اور دانشورانہ حقوق

املاک ( انٹیلیک چوئل پراپرٹی رائٹس) کو بھی ہدف بنا رہے ہیں۔

——————————————————————————
دوستو : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر کریں، فالو کریں اپڈیٹ رہیں
——————————————————————————

اخباری رپورٹس کے مطابق امریکی حکام نے الزام عاید کیا کہ یہ ہیکر چینی

حکومت سے تعلق رکھتے ہیں اور انہیں آئندہ دو چار روز میں سرکاری طور پر

خبردار کردیا جائے گا۔

چینی وزارت خارجہ نے امریکی الزامات کو یکسر مسترد کر دیا

بیجنگ میں وزارتِ خارجہ کے ترجمان ژاؤلی جیان نے اس الزام کو مسترد کر

دیا ہے، اور ان کا کہنا ہے کہ چین ہر طرح کے سائبر حملوں کو مسترد کرتا ہے-

انھوں نے ایک بیان میں کہا کہ اس وقت ہم کووِیڈ 19 کے علاج اور ویکسین کی

تیاری کے عمل میں دنیا کی قیادت کر رہے ہیں۔ ایسے میں کسی ثبوت کے بغیر

چین کو افواہوں اور مضحکہ خیز کہانیوں کے ذریعے ہدف بنانا بالکل غیر اخلاقی

حرکت ہے۔

امریکہ چین ویکسین جنگ

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply