امریکہ پاکستان تعلقات خطے میں استحکام کیلئے ضروری قرار

امریکہ پاکستان تعلقات خطے میں استحکام کیلئے ضروری قرار

Spread the love

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) امریکہ پاکستان تعلقات

امریکہ اور پاکستان کے تعلقات پر شائع ہونیوالی ایک تازہ ترین تحقیقی رپورٹ

میں بتایا گیا ہے کہ طویل عرصے سے جاری مسائل اور حالیہ چیلنجز کے باوجود

ان دونوں ممالک کے باہمی تعلقات کو کئی شعبوں میں مضبوط بنیادوں پر استوار

کیا جا سکتا ہے اور ایسا کرنا دونوں ممالک اور خطے کے لیے مفید ہو گا۔

تفصیلات کے مطابق خارجہ امور کے ماہرین کی تصنیف کردہ یہ رپورٹ ایک

ایسے وقت میں سامنے آئی جب صدر جو بائیڈن پاکستان کے ہمسایہ ملک، جنگ

سے دوچار افغانستان میں تعینات امریکی فوجوں کی موجودگی کے متعلق اہم

فیصلہ کرنے کے سلسلے میں اپنے نیٹو اتحادیوں سے مشاورت کر رہے ہیں۔

=-= یہ بھی پڑھیں: امریکہ نے پاکستان کیلئے ملٹری ٹریننگ پروگرام بحال کر دیا

دوسری طرف امریکہ دنیا کی دوسری بڑی معیشت چین کے تعلقات میں کشیدگی

جاری ہے، جبکہ پاکستان کے ہمسایہ ملک اور حریف بھارت کیساتھ امریکہ کے

تعلقات گہرے ہو رہے ہیں۔ وزیرِاعظم عمران خان اور پالیسی ساز ادارے امریکہ

اور پاکستان کے تعلقات کو ماضی کے علاقائی مسائل پر مرکوز تعاون کے مقابلے

میں انہیں دو طرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کی بنیاد پر آگے بڑھانا چاہتے ہیں۔

اس پس منظر میں رپورٹ کے مصنفین نے کہا ہے کہ امریکہ اور پاکستان کے

تعاون پر مبنی تعلقات نہ صرف علاقائی تعلقات اور تنازعات کے حل کے حوالوں

سے اہمیت کے حامل ہیں، بلکہ دونوں ممالک کے مفاد اور خطے میں استحکام کے

لیے بھی ضروری ہیں۔

= قارئین =کاوش پسند آئی ہو گی، فالو کریں اپ ڈیٹ رہیں
———————————————————————-

واشنگٹن ڈی سی میں قائم دی مڈل ایسٹ انسٹی ٹیوٹ میں افغانستان اور پاکستان

امور کے ڈائریکٹر مارون وائن بام نے کہا کہ اس بات میں کوئی شک نہیں کہ

امریکہ پاکستان کی مدد کے بغیر افغانستان میں امن اور استحکام کے اہداف حاصل

نہیں کر سکتا۔ ڈاکٹر وائن بام نے کہا کہ اگرچہ یہ تعلقات اس وقت واشنگٹن کی اہم

ترین ترجیحات میں شامل نہیں، امریکہ پاکستان کو 1990ء کے عشرے کی طرح

ہرگز نظر انداز نہیں کرے گا، کیونکہ امریکہ کو دہشت گردی کے خلاف جنگ،

افغانستان کے استحکام اور جوہری ہتھیاروں کے پھیلا کو روکنے جیسے اہم مسائل

پر پاکستان کے تعاون کی ضرورت ہے۔ انہوں نے نوٹ کیا کہ امریکی وزیر

خارجہ بلنکن نے حال ہی میں اپنے پاکستانی ہم منصب شاہ محمود قریشی سے کئی

امور پر بات بھی کی۔

=-= پاکستان خطے میں امریکہ کیلئے انتہائی اہم، رپورٹ

رپورٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے وائن بام نے کہا پاکستان کی یہ کوشش ہے کہ وہ

اپنے آپ کو امریکہ کے لیے اہم رکھے اور اس بات میں کوئی مبالغہ بھی نہیں کہ

پاکستان خطے میں امریکہ کے چین کے ساتھ تعاون اور ایران کیساتھ مذاکرات کے

تناظر میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔ جہاں تک پاکستان اور بھارت میں مسلسل

کشیدگی کا باعث مسئلہ کشمیر کا تعلق ہے، تو وائن بام کہتے ہیں امکان غالب ہے

کہ امریکہ اس تنازع پر اپنی موجودہ پالیسی جاری رکھے گا۔ واشنگٹن میں مقیم

امریکہ اور پاکستان کے تعلقات اور خارجہ امور کے ماہر شجاع نوازنے کہا کہ

پاکستان کی خطے میں اہمیت تو یقینی طور پر رہے گی لیکن اب وقت آ گیا ہے کہ

پاکستان خطے میں سٹرٹیجک معاملات کی بجائے اقتصادی تعاون پر زیادہ توجہ

دے۔

=-= پاکستان کیلئے جی ایس پی پلس جیسا امریکہ پروگرام فائدہ مند

ادھر امریکہ کو پاکستانی برآمدات پر تجارتی نرخ کم کرنا چاہیے تاکہ پاکستان

دوسرے ملکوں کی طرح اپنی اشیا امریکی منڈی بھیج سکے۔ اس ضمن میں انہوں

نے کہا کہ امریکہ کی طرف سے پاکستان کے لیے دوسرے ملکوں کی طرز پر ”

جی ایس یی پلس ” جیسا ترجیحی تجارتی رسائی پروگرام دونوں ممالک کے لیے

فائدہ مند ہو گا۔

امریکہ پاکستان تعلقات

Leave a Reply