0

امریکہ میں مسلم بستی پر حملے کی سازش ناکام، 3نوجوان گرفتار

Spread the love

امریکی ریاست نیویارک میں چار افراد کو ایک چھوٹی سی مسلم آبادی اسلام برگ کے خلاف مبینہ سازش کرنے کے الزام گرفتار کیا گیا ہے۔ان چاروں میں تین بالغ نوجوان اور ایک ٹین ایجر شامل ہے۔ ان کے پاس سے دیسی بم اور بندوقیں ملی ہیں۔ وہ سب ایک پاکستانی عالم کی ایما پر سنہ 1980 کی دہائی میں قائم کردہ اسلامبرگ پر حملہ کرنے کا منصوبہ رکھتے تھے۔امریکی ٹی وی کے مطابق تینوں گرفتار افرادمیں ااینڈریو کرائیسیل عمر18 سال، ونسینٹ ویٹرومائل عمر18 سال اور 20 سالہ برائن کولانیری شامل ہیں۔ان تمام پر ہتھیار رکھنے اور سازش کرنے کا مجرمانہ الزام ہے۔ ان کے علاوہ ایک 16 سالہ بچے پر بھی یہی الزامات ہیں۔پولیس کا کہنا تھا کہ انھوں نے نیویارک ریاست کے شمال مغربی شہر گریس میں کم از کم تین بم بنائے جس میں انھوں نے ٹیپ، بڑے جار، سیلینڈر اور کانٹیوں اور چھروں کا استعمال کیا ۔پولیس نے بتایا کہ یہ 16 سالہ بچے کے گھر پائے گئے جبکہ مختلف قسم کی 23 بندوقیں، ریوالور اور پسٹل بھی مختلف مقامات پر پائی گئیں۔گریس کے پولیس سربراہ پیٹرک فیلان نے کہا کہ جمعے کو ایک سکول کے 16 سال بچے کے بیان کے بعد یہ تفتیش شروع کی گئی۔ اس بچے کا کہنا تھا کہ انھوں نے اپنے ایک ساتھی کو کسی سے بات کرتے ہوئے سنا تھا۔ پاکستان سے آنے والے ایک صوفی عالم مبارک علی شاہ نے اپنے مریدوں کی جماعت کو ترغیب دی تھی کہ وہ شہر کی بھیڑ سے دور مذہبی طرز زندگی پر مبنی بستی آباد کریں۔ان کے مریدوں میں افریقی نڑاد امریکی کی کثیر تعداد ہے اور انھوں نے اپنے پیرو مرشد کی خواہش کے مطابق شہر سے دور بستیاں آباد کی اور آج وہاں تقریباً ایک درجن انکلیوز ہیں۔

Leave a Reply