Afghan Taliban,Peace Accord,Doha Dialog,Pakistan Invitation, 104

امریکہ اورافغان طالبان میں 29 فروری کو معاہدہ طے پانے کی توقع

Spread the love

واشنگٹن (جتن آن لائن خصوصی رپورٹ) امریکہ افغان طالبان معاہدہ

واشنگٹن کے باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے دوحہ میں افغان طالبان اور امریکی نمائندوں کے درمیان ہونے والے امن مذاکرات اب اتفاق رائے کی طرف تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ فریقین کے مابین رواں ماہ کی آخری تاریخ کو امن معاہدہ طے پانے کے قوی امکانات پیدا ہو گئے ہیں- مزید پڑھیں

معاہدے پر دستخط کے بعد غیر ملکی افواج کا انخلاء شروع ہو جائیگا، ذرائع

امریکی محکمہ خارجہ کے منسلک افغان مصالحتی امور کے خصوصی مندوب کے دفتر کے حکام نے عندیہ دیا ہے کہ زلمے خلیل زاد کی کامیاب ڈپلومیسی کے نتیجہ میں بالا آخر طالبان 22 فروری سے جنگ بندی کیلئے تیار ہوگئے ہیں۔ ان کے مطابق اگر راستے میں کوئی غیر متوقع رکاوٹ پیدا نہ ہوئی تو دونوں فریق 29 فروری کو امن معاہدے پر دستخط کردیں گے۔ اس وقت افغانستان میں تیرہ ہزار آٹھ سو امریکی فوجی اور نیٹو کے 39 اتحادی ممالک کے سترہ ہزار فوجی موجود ہیں۔ مجوزہ معاہدے کے تحت دستخط ہونے کے بعد تمام غیر ملکی افواج کا انخلاء شروع ہو جائے گا۔

دوران انخلاء افغان طالبان حملے نہیں کریں گے، یقین دہانی کرا دی گئی

انخلاء کے دوران افغان طالبان ان پر حملے نہیں کریں گے جو اس عمل کو پوری طرح پرامن رکھیں گے۔ یاد رہے جمعہ کے روز امریکی وزیر خارجہ مارک ایسپر نے جرمنی میں بین الاقوامی سیکیورٹی کانفرنس میں شرکت کے موقع پر ایک بیان میں بتایا تھا کہ افغان طالبان سات روز کےلئے ملک میں مہلک حملے روکنے پر بھی تیار ہوگئے ہیں جس سے بھی یہ اشارہ ملتا تھا کہ ایک ہفتہ تک ماحول پر امن رہا تو پھر شورش زدہ ملک میں باقاعدہ مکمل جنگ بندی ہو جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں: افغان جنگ کا خاتمہ، امریکہ کی چال یا۔۔۔؟

امریکہ افغان طالبان معاہدہ

Leave a Reply