0

اقوام متحدہ کے ایک تہائی ملازمین کے جنسی ہراسیت کے شکار ہونے کا انکشاف

Spread the love

اقوام متحدہ کے ایک تہائی38.7فیصد ملازمین جن میں مرد و خواتین شامل ہیں کوگزشتہ دو سال میں ملازمت کے دوران جنسی ہراسیت سامنا کرنا پڑا۔یہ صورتحال ایک سروے میں سامنے آئی جس کے نتائج اقوام متحدہ کی آن لائن پر جاری کئے گئے ہیں۔اقوا م متحدہ کے سسٹم کے اند ر اپنی نوعیت کا یہ پہلا سروے ہے جو نومبر2018میں گلوبل آڈیٹنگ اور مشاورتی فرم نے کیا ہے۔سروے میں اقوا م متحدہ کے 31 ا د ا ر و ں کے30ہزار ملازمین سے رائے لی گئی جس میں یہ بات مشترکہ طور پر سامنے آئی کہ زیادہ تر جنسی ہراسیت جنسی کہانیوں،گفتگو یا مذاق کی صورت میں ہوئی۔ایسے افراد کی تعداد21.7فیصد تھی جبکہ شکل و صورت،جسم یا جنسی سرگرمیوں کے بارے میں رائے زنی کی اوسط 14.2فیصد تھی جبکہ جنسی معاملات کو ناپسندیدہ انداز میں زیر بحث لانے کی شرح13فیصد تھی۔باڈی لینگویج کے ذریعے جنسی اشارے کر نے کی شرح10.9فیصد جبکہ جسم کو مس کرنا جسے ناگوار محسوس کیا گیا ہو کی شرح10.1فیصد رہی،اس میں تقریباً ہر عمر کے مرد وخواتین شامل ہیں۔

Leave a Reply