جنگ بندی، جو کام عالمی طاقتیں نہ کر سکیں افغان قبائلی عمائدین نے کر دکھائی

جو کام عالمی طاقتیں نہ کر سکیں افغان قبائلی عمائدین نے کر دکھایا

Spread the love

کابل (جے ٹی این آن لائن انیٹرنیشنل نیوز) افغان قبائلی عمائدین

مشرقی افغانستان میں قبائلی عمائدین نے وہ کام کر دکھایا جو طویل عرصے سے

عالمی لیڈرز کرنے میں ناکام رہے- انہوں نے طالبان اور افغان حکومت کے مابین

مقامی سطح پر جنگ بندی کرا دی۔

=-= ایسی ہی مزید معلومات پر مبنی خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

میڈیا رپورٹ کے مطابق جنگ سے بری طرح متاثر ہونے والے صوبے لغمان کے

ضلع علی نگر میں مہینوں سے جاری امن کے باعث مقامی کسانوں کو اپنی فصلیں

کاشت کرنے اور طلبہ کو امتحانات میں بیٹھنے کا موقع مل گیا۔ علی نگر کے

شہری جابر الکوزئی نے بتایا جنگ بندی قیمتی ہے اور افغانستان میں قیام کے لیے

دنیا کے طاقتور ممالک کوشش کر رہے ہیں، لیکن بدقسمتی سے ایسا نہیں کرسکے۔

قبائلی عمائدین نے مطالبات پر مشتمل ایک خط تیار کیا تھا، جس کو مقامی زبان

میں عریضہ کہا جاتا ہے، جس پر طالبان جنگجو اور حکومت دونوں کے دو مقامی

عہدداروں نے دستخط کر دیئے۔ رپورٹ کے مطابق علی نگر میں جنگ بندی کے

آغاز سے اب تک جھڑپوں کی کوئی رپورٹ نہیں جبکہ لغمان کے دیگر علاقوں

میں شدید کشیدگی رہی، دونوں فریقین کے درمیان ہونے والی جنگ بندی 21 جون

کو ختم ہو جائے گی لیکن جنگ کے دوران اس طرح کا معاہدہ کوئی نئی بات نہیں

ہے تاہم ایک اہم وقت میں یہ پیش رفت ہوئی ہے۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

افغان صوبے ہلمند میں سڑک کنارے بم پھٹنے سے9 افراد ہلاک اور دو بچے شدید

زخمی ہو گئے، افغان میڈیا کے مطابق صوبے ہلمند میں ایک گاڑی سڑک کنارے

نصب بم سے ٹکرا گئی جس کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک اور 2 بچے زخمی ہو

گئے، واقعے کے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ

آپریشن شروع کر دیا جبکہ ابھی تک کسی بھی گروپ نے ذمہ داری قبول نہیں کی۔

افغان قبائلی عمائدین

Leave a Reply