افغان امن ٹرمپ عمران کی مشترکہ خواہش،اسد مجید خان

Spread the love

واشنگٹن( جے ٹی این آن لائن ) امریکی صدر ٹرمپ اور وزیراعظم پاکستان عمران خان دونوں افغانستان میں قیام امن کی ایک جیسی خواہش رکھتے ہیں اور وہ اس سلسلے میں ایک ہی صفحے پر ہیں ،

یہ ریمارکس امریکہ میں پاکستان کے سفیر ڈاکٹر اسد مجید خان نے گزشتہ شب میری لینڈ میں اپنے ا عزاز میں ایک عشائیے سے خطاب کرتے ہوئے کیاجس کا اہتمام میری لینڈ میںجنوبی ایشیائی کمیونٹی نے کیا تھا ،

انکا مزید کہناتھا پاکستان امریکہ کےساتھ اپنے تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے ایک مشکل دور سے گزرنے کے بعد دونوں ممالک اب افغا نستان میں امن و استحکام کے قیام کے مشترکہ مقاصد پر عمل پیرا ہیں

امریکہ ہمارا سب سے بڑا تجارتی شراکت دار اوربرآمدات ایک اہم مارکیٹ ہے جس کےساتھ تعلقات بڑھانے میں ہماری بہت دلچسپی ہے ،

پاکستان اپنے ہمسایوں کےساتھ پر امن ماحول قائم کرنے کی پالیسی پرعمل کر رہاہے جو بھارت سمیت تمام ہمسایوں کےساتھ اچھے تعلقات قائم کرنے کا خواہاں ہے ،

کرتار پور کوریڈور کو کھولنے کا فیصلہ بھی اس جذبے کے تحت کیا گیا تھا، بد قسمتی سے ابھی جو حال ہی میں پلوامہ میں جو حملہ ہوا اس سے بھارت جنگی ماحول پیدا اور خطے میں کشیدگی میں اضافہ کرنے کےلئے استعمال کررہا ہے

پاکستان نے پیشکش کی ہے اگر بھارت پاکستان کےساتھ مذاکرات کرتا ہے اوراس واقعے کا کوئی ثبوت فراہم کرتا ہے تو وہ اس کی تحقیقات کرنے کےلئے تیار ہے ۔

تقریب میں موجود ت سکھ کمیونٹی کے افراد نے کرتا ر پور کوریڈور کھولنے پر حکومت پاکستان کا شکریہ ادا کیا ۔

اسد مجید نے پاکستانی امریکن کمیونٹی کی خدمات کوسراہتے ہوئے درخواست کی کہ وہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان بہتر تعلقات کی تعمیر کےلئے ایک سرگرم کردار ادا کرتے رہیں۔

انہوں نے یقین دلایا ان تعلقات کو مضبوط بنانے کے کمیونٹی کے کردار کو سفارتخا نے کی طرف سے بھر پور حمایت حاصل رہے ہیں۔

Leave a Reply