افغان آرمی چیف کا طالبان ،سابق فوجیوں پر مشتمل باضابطہ فوج تشکیل دینے کا اعلان

افغان آرمی چیف کا طالبان ،سابق فوجیوں پر مشتمل باضابطہ فوج تشکیل دینے کا اعلان

Spread the love

افغان آرمی چیف طالبان

کابل، نیویارک (جے ٹی این آن لائ نیوز) افغان آرمی چیف قاری فصیح الدین نے طالبان کی پیشہ ور

فوج بنانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ فوج ملک کی سرحدوں کی حفاظت جبکہ طالبان کیخلاف

لڑنے والوں کیخلاف کارروائی کرئے گی ۔افغان آرمی چیف نے مزید کہا نئی فوج اہل افسران پر

مشتمل ہوگی جن میں گذشتہ حکومت کے فوجی بھی شامل کیے جائیں گے، ایسے لوگ جنھوں نے

تربیت حاصل کی ہے اور پیشہ ور ہیں وہ ہماری نئی فوج میں استعمال ہوسکیں گے۔ ہمیں امید ہے یہ

فوج مستقبل قریب میں تشکیل دی جائیگی ۔افغانستان کے ایک مقامی اخبار کے مطابق کابل میں گذشتہ

روز ایک اجلاس میں قاری فصیج الدین نے پنج شیر میں طالبان مخالف اتحاد کا ذکر نہیں کیا،مگر ان

کا کہنا تھا نسل، مزاحمت اور جمہوریت کے دفاع کے نام پر طالبان کیخلاف لڑنے والوں کیخلاف

کارروائی کی جائے گی۔دوسری جانب طالبان نے تقریبا ایک کروڑ23لاکھ امریکی ڈالرز مالیت کی

نقدی اور کچھ سونا ملک کے مرکزی بینک دا افغانستان بینک (ڈی اے بی)کے حوالے کر دیاہے۔بینک

کی جانب سے جمعرات کو جاری کردہ ایک بیان کے مطابق سابقہ انتظامیہ کے عہدیداروں کے

گھروں اور سابق حکومت کی خفیہ ایجنسی کے مقامی دفاتر سے ملنے والی نقدی اور سونے کی اینٹیں

دا افغانستان بینک کے خزانے میں واپس کردی گئی ہیں۔ امارت اسلامیہ افغانستان کے عہدیداروں نے

ان اثاثوں کو قو می خزانے کے حوالے کر کے شفافیت کیلئے اپنے عزم کو ثابت کردیا ہے ۔دریں

اثنائطالبان قیادت میں اختلافات کی خبروں پر ملا عبدالغنی برادر کے بعد طالبان رہنما انس حقانی کا

بھی اہم بیان سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے اختلافات کی خبروں کو بے بنیاد قرار دیا ہے۔ٹوئٹر پر

جاری بیان میں انس حقانی نے کہا امارت اسلامی کیخلاف تمام افواہیں پروپیگنڈا ہیں اور قیادت میں

اختلافات کی خبریں بے بنیاد ہیں۔ دشمنوں کا مذموم پروپیگنڈا اس اتحاد کو کوئی نقصان نہیں پہنچا

سکتا، امارت اسلامی متحد، اسلامی اور افغان اقدارکا احترام کرتی ہے۔ ہم افغانستان میں امن، استحکام

اور خوشحالی لانے کیلئے متحد ہیں۔ادھراقوام متحدہ کی ایلچی نے افغانستان کے نئے وزیر داخلہ سے

ملاقات کی ،غیر ملکی میڈیا کے مطابق طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے سماجی روابط کی ویب

سائٹ ٹوئٹر پر ایک بیان میں کہا افغانستان میں اقوام متحدہ کے مشن کی سربراہ ڈیبورا لیونز اور سراج

الدین حقانی کے درمیان ہونیوالی ملاقات انسانی امداد پر مرکوز رہی۔ سراج الدین حقانی نے زور دیا

کہ اقوام متحدہ کے اہلکار بغیر کسی رکاوٹ کے اپنا کام انجام دے سکتے ہیں اور افغان عوام کو اہم

امداد پہنچا سکتے ہیں۔انہوں نے عالمی برادری کیساتھ مشترکہ تعلقات پر بھی زور دیا۔

افغان آرمی چیف طالبان

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply