سافٹ امیج کوئی چیز نہیں، دنیا میں عزت کیلئے خود داری ضروری، کپتان

افغانستان میں مخلوط حکومت کے قیام کیلئے ہر ممکن کوشش کی جائے ، عمران خان

Spread the love

افغانستان میں مخلوط حکومت

دو شنبے (جے ٹی این آن لائن نیوز) وزیراعظم عمران خان کی قازقستان کے صدر قاسم جومارٹ،

ایران کے صدر ابراہیم رئیسی اور بیلاروس کے صدر الیگزینڈر سے ملاقات ہوئی ہے۔، یہ ملاقاتیں

شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہ اجلاس کے موقع پر ہوئیٰں، ملاقات وں میں دو طرفہ تعلقات اور

عالمی و علاقائی امور پر تبادلہ خیال کیا۔ گیا۔ملاقاتوں میں تجارت، سرمایہ کاری، ٹرانسپورٹ سمیت

مختلف شعبوں میں تعلقات کے فروغ پر بات چیت کی گئی۔وزیراعظم عمران خان نے سہ ملکی ریلوے

منصوبے کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی، ریلوے منصوبہ ازبک شہر ترمیز سے شروع ہو کر

افغانستان کے شہر مزارشریف،کابل ، جلال آباد سے ہوتا ہوا پاکستان کے صوبے خیبرپختونخوا کے

صوبائی دارالحکومت پشاور تک ہوگا۔اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان سینٹرل ایشیا

پالیسی کے تحت وسط ایشیائی ریاستوں کیساتھ تعلقات کو وسعت دینا چاہتا ہے پاکستان سی پیک کو

وسط ایشیائی ممالک تک توسیع دینا چاہتا ہے ، پاکستان وسط ایشیائی ملکوں کو سمندری تجارت کیلئے

اپنی بندرگاہوں سے مختصرترین روٹ فراہم کرسکتا ہے۔بد ازاں تاجک صدر کے ساتھ ملاقات میں

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں بدقسمتی سے بجلی بہت مہنگی ہے۔پاکستان اور

تاجکستان کے مابین کاروباری شعبے میں تعاون کو فروغ دینے کیلئے مشترکہ بزنس فورم سے

وزیراعظم نے کہا کہ افغانستان میں کئی سال کے تنازع کے بعد امن قائم ہو گا، پاک تاجک تجارت

کیلئے افغانستان میں امن قیام ضروری ہے تاکہ نقل و حمل بہتر ہوسکے، تاجک صدر اور میں مل کر

افغان امن کیلیے ہر ممکن کوشش کریں گے ، خصوصا دو بڑی برادریوں پشتون اور تاجک کو قریب

لانے اور مخلوط حکومت کے قیام کو یقینی بنانے کیلئے پوری کوشش کریں گے۔انہوں نے کہا کہ

پاکستان سے مختلف شعبوں کی 67 کمپنیاں تاجکستان آئی ہیں، کانفرنس کا مقصد دونوں ممالک کے

درمیان کاروباری روابط بڑھانا ہے۔ تاجکستان میں سستی، صاف ستھری ہائیڈرو بجلی ہے لیکن

پاکستان میں بدقسمتی سے بجلی بہت مہنگی ہے۔اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ امید

کرتے ہیں کاسا 1000 توانائی منصوبے سے ہمیں بھی تاجکستان کی بجلی سے فائدہ پہنچے گا،، دو

طرفہ تجارت سے دونوں ممالک کو فائدہ ہوگا۔اس سے قبل وزیراعظم عمران خان سے قازقستان کے

صدر کی ملاقات ایس سی او سمٹ کی سائیڈ لائنز پر ہوئی۔ ملاقات میں پاکستان کی طرف سے وزیر

خارجہ شاہ محمود قریشی، مشیر قومی سلامتی معید یوسف، وفاقی وزیر بحری امور علی زیدی، وفاقی

وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری اور قازقستان وفود نے شرکت کی۔وفاقی وزیر اطلاعات فواد

چودھری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کی روس کے صدر کے ساتھ ملاقات

طے تھی، صدر پیوٹن قرنطینہ میں ہونے کی وجہ سے دوشنبے نہیں آ رہے، صدر پیوٹن اور

وزیراعظم عمران خان کی فون پر بات ہوئی، وزیراعظم عمران خان اور صدر پیوٹن کے درمیان

ملاقات جلد متوقع ہے۔ پاکستان اور تاجکستان کے قریبی برادرانہ تعلقات ہیں، وزیراعظم تاجکستان میں

بزنس کانفرنس میں شرکت کریں گے، پاکستان اور تاجکستان کے درمیان کاروباری روابط بڑھانے پر

بات ہوگی، افغانستان کی صورتحال کانفرنس کا کلیدی حصہ رہے گی، تاجکستان کا افغانستان کے

حوالے سے کردار اہم ہے، دورہ تاجکستان سے ہمارے نظریے کو تقویت ملے گی۔اس سے قبل

قازقستان کے صدر قاسم جمارت توکایوف کے اتھ ملاقات میں وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ

افغانستان میں امن و استحکام پاکستان اور خطے کے لئے اہمیت کا حامل ہے، عالمی برادری انسانی

ہمدردی کی بنیادوں پر اشدضروریات کو پورا کرنے کے لئے افغان عوام کی حمائت جاری

رکھے،معاشی استحکام کے لئے اقدامات اٹھائے جائیں ۔ ۔ وزیر اعظم عمران خان اور قازقستان کے

صدر کے درمیان دوشنبے میں ایس سی او کونسل کے سربراہان مملکت کے اجلاس کے موقع پر

دوطرفہ ملاقات ہوئی ۔دونوں رہنماؤں کے درمیان دوطرفہ تعلقات اور علاقائی اور عالمی معاملات پر

تبادلہ خیال کیا گیا ۔ انہوں نے مختلف شعبہ جات بالخصوص تجارت ، سرمایہ کاری و ٹرانسپورٹیشن

رابطوں میں پاک قازقستان تعلقات کو مزید بڑھانے کا اعادہ کیا ۔وزیر اعظم عمران خان نے اس موقع

پر یہ بات زور دے کر کہی کہ پاکستان اپنی ویژن سینٹرل ایشیاء پالیسی کے تحت وسطی ایشیاء ممالک

کے ساتھ جامع روابط کو اپ گریڈ کرنے کا عزم رکھتا ہے وزیر اعظم نے خاص طور پر آپس میں

رابطوں اور سمندری راستے کے ذریعے مختصر رسائی فراہم کرنے میں پاکستان کی اہم پوزیشن کو

اجاگر کیا ۔ وزیر اعظم نے افغان ٹرانس افغان ریلوے پروجیکٹ جو کہ ترمز ، مزار شریف ، کابل ،

جلال آباد کو پشاور سے ملاتا ہے کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی ۔ وزیر اعظم نے سماجی اقتصادی

ترقی اور ملک کی جغرافیائی سیاست کو جغرافیائی معیشت میں بدلنے کو ترجیح دینے کے حوالے

سے اپنے ویژن کو بھی اجاگر کیا ۔ ملاقات میں علاقائی تعلقات کے فروغ کے لئے زمینی و فضائی

راستوں کے لئے رابطوں کو بڑھانے کا بھی فیصلہ کیا گیا ۔ وزیر اعظم نے صدر قاسم جمارت

توکایوف کو دورہ پاکستان کی دعوت دی جبکہ قازق صدر نے بھی وزیر اعظم کو دورے کی دعوت

دی ۔

افغانستان میں مخلوط حکومت
افغانستان میں مخلوط حکومت

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply