افغانستان میں امن پاکستان کا بیانیہ، سپہ سالار افواج پاک جنرل قمر جاوید باجوہ

افغانستان میں امن پاکستان کا بیانیہ، سپہ سالار افواج پاک جنرل قمر جاوید باجوہ

Spread the love

راولپنڈی (جے ٹی این آن لائن نیوز) افغانستان میں امن

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے افغانستان میں امن پاکستان کا بیانیہ

اور دونوں ممالک کا امن ایک دوسرے سے وابستہ ہے، میڈیا پاک افغان عوام کے

مابین رابطوں کے فروغ اور سازگار ماحول پیدا کرنے کیلئے پل کا کام کر سکتا

ہے، امن دشمنوں کو پہچاننا اور شکست دینا میڈیا اور عوام کی ذمہ داری ہے۔

=-= پاکستان سے متعلق مزید تازہ ترین خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق افغان میڈیا کے 15

رکنی وفد نے جی ایچ کیو کا دورہ کیا اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے

ملاقات کی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے آرمی چیف نے کہا میڈیا دونوں ممالک

کے درمیان ثقافتی معاشرتی و عوامی رابطوں کے فروغ اور سازگار ماحول پیدا

کرنے کیلئے پل کا کام کر سکتا ہے، آرمی چیف نے کہا امن دشمنوں کو پہچاننا،

انہیں شکست دینا میڈیا اور عوام کی ذمہ داری ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی

چیف نے کہا افغانستان میں امن پاکستان کی دیرینہ خواہش و بیانیہ ہے کیونکہ

دونوں ممالک کا امن باہم جڑا ہوا ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے

کہا کہ امن دشمنوں کو امن عمل کو سبو تاژ کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی-

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

پاکستان کی جامع بارڈر مینجمنٹ کا ذکر کرتے ہوئے آرمی چیف نے کہا سرحدوں

کی حفاظت دونوں ممالک کے مفاد میں ہے۔ دونوں ممالک علاقائی روابط سے فائدہ

اٹھا سکتے ہیں۔ جنرل قمرجاوید باجوہ نے افغان صحافیوں کے وفد سے بات چیت

میں کہا افغانستان میں پائیدار امن سے خطے میں ترقی ہو گی، پاک افغان یوتھ فورم

سے باہمی روابط کو فروغ ملے گا۔ آرمی چیف نے کہا کہ پاک افغان نوجوان خطے

کا مستقبل ہیں۔ آئی ایس پی آر کے مطابق افغان صحافیوں نے تبادلہ خیال کا موقع

دینے پر آرمی چیف سے اظہار تشکر کیا۔ افغان میڈیا کے وفد نے پاکستان کا افغان

مہاجرین کی میزبانی اور امن عمل میں کردار کو قابل قدر قرار دیا۔ پاک فوج کے

سربراہ سے ملاقات کے دوران افغان صحافیوں کے وفد نے افغان امن کے لیے

پاکستان کے کردار کو بھی سراہا اور امن کیلئے پاکستان کی سنجیدہ کاوش کی بھی

تعریف کی۔

افغانستان میں امن ، افغانستان میں امن ، افغانستان میں امن

Leave a Reply