افغانستان میں پہلے بھی مذاکرات کے حامی تھے، آج بھی ہیں، مولانا فضل الرحمن

افغانستان میں پہلے بھی مذاکرات کے حامی تھے، آج بھی ہیں، مولانا فضل الرحمن

Spread the love

پشاور(بیورو چیف عمران رشید خان) افغانستان مولانا فضل الرحمن

Journalist Imran Rasheed

سربراہ جمعیت علماء اسلام مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ موجودہ حکمران

ایجنڈے کے تحت ملک کو سیکولر ازم کی طرف لے جارہے ہیں، سرکاری سطح

پر فحاشی اور عریانی کی سرپرستی کی جا رہی ہے۔ فرقہ روایت اور تعصبات کو

ہوا دے کر حکمران چپکے سے اسلام کے خلاف قانون سازی کررہے ہیں، پاکستان

میں مہنگائی کی شرح روز بروز بڑھتی جا رہی ہے اور روانہ کی بنیاد اشیائے

ضرورت کی قیمتوں میں اضافہ نااہل حکمرانوں کی ناقص کارکردگی اور پالیسیوں

کا نتیجہ ہے۔

=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

جے یوآئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے جے یوآئی کی صوبائی مجلس

شوریٰ ضلعی امراء و نظماء اور اراکینِ اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کرتے

ہوئے کہا کہ موجودہ حکمران ایجنڈے کے تحت ملک کو سیکولر ازم کی طرف لے

جا رہے ہیں، سرکاری سطح پر فحاشی اورعریانی کی سرپرستی کی جا رہی ہے۔

افغانستان میں پہلے بھی مذاکرات کے حامی تھے اور آج بھی مذاکرات پر یقین

رکھتے ہیں، افغانستان کو امریکی تسلط سے نجات دلانے والوں کو خراج تحسین

پیش کیا تھا اور کرتا رہوں گا۔ انہوں نے کہا کہ فرقہ روایت اور تعصبات کو ہوا

دے کر حکمران چپکے سے اسلام کے خلاف قانون سازی کررہے ہیں، انہوں نے

کہا کہ ایف اے ٹی ایف ( FTAF ) اور خواتین تشدد بل اسلام اور آئین کے خلاف

زبردستی منظور کرایا گیا اور ہمارے ادارے اس قانون سازی میں مکمل شریکِ

رہے-

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

انہوں نے کہا کہ کشمیر، گلگت کے انتخابات 2018ء کے انتخابات کی طرح

متنازعہ انتخابات ہیں پاکستان اور گلگت کی طرح کشمیر میں بھی سلیکٹیڈ حکمران

مسلط کئے جارہے ہیں- انہوں نے کہا کہ پاکستان میں مہنگائی کی شرح روز بروز

بڑھتی جا رہی اور روانہ کی بنیاد اشیائے ضرورت کی قیمتوں میں اضافہ نااہل

حکمرانوں کی ناقص کارکردگی اور پالیسیوں کا نتیجہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی

ایم کے بیانیہ سے اختلاف کرنے والے فارغ ہو چکے ہیں، پی ڈی ایم حکومت کے

خاتمے تک اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔

افغانستان مولانا فضل الرحمن ، افغانستان مولانا فضل الرحمن ، افغانستان مولانا فضل الرحمن

Leave a Reply