Millions of Muslims are Performing Hajj at Bait Ullah Macca

اس سال حج4 لاکھ 90 ہزار روپے میں ہوگا،60فیصدسرکاری، 40فیصد عازمین پرائیویٹ سکیم کے تحت جائینگے ، وفاقی وزیرمذہبی امور

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اسلام آباد ( سٹاف رپورٹر )وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ہونے والے

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں حج پالیسی 2020 کی منظوری دی گئی جس کے بعد

رواں سال سرکاری حج اسکیم کے تحت حج 4 لاکھ 80 ہزار سے 4 لاکھ 90 ہزار

تک میںہوگا۔اجلاس میں وزیراعظم نے ہدایت کی کہ ائیرلائنز کے کرائے اور

ٹیکسز کو کم کیا جائے اور حجاج پر کم سے کم بوجھ ڈالا جائے۔بعد ازاں

وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق

اعوان کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نور

الحق قادری کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کی جانب سے پاکستان کو دیا گیا کوٹہ ایک

لاکھ 79 ہزار 210 ہے۔انہوں نے کہا کہ حج کے عمل کو آسان بنانے کے لیے

وزیراعظم نے خصوصی ہدایات دیں جس کے بعد گزشتہ ہفتے سعودی حکام سے

اہم مذاکرات کیے۔ان کا کہنا ہے کہ پہلے حج اخراجات ساڑھے 5 لاکھ روپے بن

رہے تھے لیکن اب حج کا خرچہ 4 لاکھ 90 ہزار روپے ہوگا۔وفاقی وزیر کا کہنا

تھا کہ 70 سال سے زائد عمرکے شہریوں کے لیے 10 ہزار کا کوٹہ مقرر کیا گیا

ہے، اوورسیز پاکستانیوں کے لیے ایک ہزار کا کوٹہ رکھا گیا ہے، کوئٹہ سے

حجاج کے لیے براہ راست فلائٹس چلائی جائیں گی۔انہوں نے مزید بتایا کہ پاکستانی

عازمین کی امیگریشن پاکستان میں ہی ہوگی، انہیں سعودی ائیرپورٹس پر لائنیں

لگانا نہیں پڑیں گی جبکہ روڈ ٹو مکہ پروجیکٹ میں دیگر شہروں کی شمولیت سے

متعلق بات چیت جاری ہے۔خیال رہے کہ حج پالیسی 2018 کے تحت شمالی ریجن

سے جانے والے عازمین حج نے 2 لاکھ 80 ہزار روپے اور جنوبی ریجن سے

تعلق رکھنے والے عازمین کو 2 لاکھ 70 ہزار روپے جمع کرائے تھے۔ وفاقی

وزیر مذہبی امور نور الحق قادری کا کہنا ہے کہ فضائی سفر مہنگا ہونے اور

روپے کی قدر میں کمی کے عوامل حج اخراجات میں اضافے کا باعث بنے۔ نور

الحق قادری کا کہنا تھا کہ اس سال سعودی عرب کی جانب سے پاکستان کو 1 لاکھ

89 ہزار 210 حجاج کا کوٹا دیا گیا ہے، 60 فیصد حجاج سرکاری حج اسکیم سے

جب کہ 40 فیصد پرائیویٹ ٹورز آپریٹر کے ذریعے جائیں گے، 70 سال سے زائد

عمر کے بزرگ شہریوں کے لیے 10 ہزار اور اوورسیز پاکستانیوں کے لیے ایک

ہزار افراد کا کوٹا رکھا گیا ہے۔حکومت نے سرکاری حج اسکیم میں ارکان پارلیمنٹ

کا کوٹہ بحال کرنے کا فیصلہ کرلیا اور ارکان پارلیمنٹ کی سفارش پر 2 ہزار

عازمین حج پر جائیں گے گزشتہ تین سال سے قرعہ اندازی میں ناکام رہنے والے

عازمین کو بغیر قرعہ اندازی منتخب کیا جائے گا، 70 سال سے زائد عمر شہریوں

کے لیے دس ہزار کا کوٹہ مختص کیا گیا ہے پہلی بار حج پالیسی میں اووسیز

پاکستانیوں کے لیے ایک ہزار کا کوٹہ اورای او بی آئی سے ملحقہ پرائیویٹ

کمپنیوں کے کم آمدنی والے ملازمین کے لیے 500 کا کوٹہ مختص کیا گیا ہے

Leave a Reply